مسلمانوں کی ’نسل کشی‘ پر بھارت میں خانہ جنگی ہو سکتی ہے: نصیر الدین شاہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بالی ووڈ کے نامور اداکار نصیر الدین شاہ نے بھارت میں خانہ جنگی کا خدشہ ظاہر کر دیا۔

بھارتی میڈیا کو دیے گئے انٹرویو میں نصیر الدین شاہ ملک میں مذہبی منافرت کے بڑھتے رجحان پر پھٹ پڑے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت میں مسلمانوں کے خلاف اسی طرح مہم چلتی رہی تو بھارت میں خانہ جنگی کا خدشہ ہے۔

بھارتی اداکار نے مزید کہا کہ بڑھتی مذہنی منافرت پر وزیراعظم نریندر مودی کی خاموشی سے لگتا ہے کہ انہیں حالات کی کوئی پروا نہیں ہے۔ اُن کا کہنا تھا کہ نریندر مودی سرکار میں مسلمانوں کو دوسرے درجے کا شہری بنایا جا رہا ہے اور یہ ہر شعبے میں ہو رہا ہے۔

انٹرویو کے دوران پوچھے گئے سوال نریندر مودی کے بھارت میں مسلمان ہونا کیسا لگتا ہے؟ جواب میں نصیر الدین شاہ نے کہا کہ مسلمانوں کو پسماندہ اور بے کار بنایا جا رہا ہے، مسلمانوں کو کچلا جائے گا تو وہ لڑیں گے۔ انہوں نے کہا کہ مسلمان اپنے گھر، خاندان اور بچوں کا دفاع کر رہے ہیں۔ مسلمانوں کے خلاف اسی طرح مہم چلتی رہی تو بھارت میں خانہ جنگی کا خدشہ ہے۔

بھارتی وزیراعظم مودی کی خون خرابے، نسل کشی پر مکمل خاموشی کے سوال پر بھی بھارتی اداکار نے جواب دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ نریندر مودی کو کسی کی کوئی پروا نہیں، بھارتی وزیراعظم تو نسل کشی کی دھمکیاں دینے والوں کو ٹوئٹر پر فالو کرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں