.

سعودی عرب میں معدنیات کے5300 سے زیادہ مقامات ہیں: ماہرارضی علوم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی جیالوجسٹس کوآپریٹو ایسوسی ایشن کے چیئرمین پروفیسرعبدالعزیز بن لابن نے ایک بیان میں کہا کہ سعودی عرب میں 5300 سے زائد معدنی مقامات موجود ہیں۔

یہ بیان ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب الریاض میں ’پائیدارمستقبل معدنیات‘ کے موضوع پرپہلی وزارتی گول میزکانفرنس منعقد ہورہی ہے۔یہ مستقبل معدنیات فورم کا حصہ ہے۔

سعودی عرب میں معدنیات کی تلاش کے سابقہ عمل سے پتاچلا ہے کہ 5,300 مقامات میں متنوع دھاتی اورغیر دھاتی چٹانیں، تعمیراتی مواد،آرائشی چٹانیں اور جواہرات شامل ہیں۔

پروفیسرعبدالعزیز نے بتایاکہ معدنی دولت سے مالا مال چٹانیں عرب شیلڈ کے علاقے میں پائی جاسکتی ہیں۔ان کا کل رقبہ قریباً 6لاکھ 30 ہزارمربع کلومیٹرپرمحیط ہے۔

اگرچہ عرب شیلڈ کے ایک جامع معدنی سروے میں مزید معدنی وسائل کی تلاش کی جائے گی لیکن مملکت سعودی عرب کے کل رقبے کا قریباًایک تہائی حصہ دھاتی معدنیات مثلاً سونا، چاندی، تانبا،لوہااورنایاب اورتابکارعناصر پر مشتمل ہے۔انھوں نے تیل اور پیٹروکیمیکلز کے بعد معدنیات کو’’قومی معیشت کے لیے تیسرامعاشی ستون‘‘ قراردیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں