نو منتخب اسکاٹش فرسٹ منسٹر حمزہ یوسف کی سرکاری رہائش گاہ پر افطار، نماز کی امامت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسکاٹ لینڈ کے نو منتخب پاکستانی نژاد فرسٹ منسٹر حمزہ یوسف عہدے کا حلف اٹھانے کے بعد خاندان کے ہمراہ فرسٹ منسٹر کی سرکاری رہائش گاہ بیوٹ ہاؤس ایڈنبرا پہنچ گئے۔

حمزہ یوسف نے بیوٹ ہاؤس میں اپنی فیملی کے ساتھ افطاری کی اور نماز کی امامت بھی کرائی۔ دوران نماز ان کے اہل خانہ کے افراد موجود تھے۔

حمزہ یوسف اپنے والد مظفر یوسف، والدہ شائستہ بُھٹہ، اہلیہ نادیہ اور بچیوں کے ہمراہ۔ فوٹو: رائیٹرز
حمزہ یوسف اپنے والد مظفر یوسف، والدہ شائستہ بُھٹہ، اہلیہ نادیہ اور بچیوں کے ہمراہ۔ فوٹو: رائیٹرز

غیر ملکی خبر ایجنسی کے مطابق حمزہ یوسف کے فرسٹ منسٹر بننے پر برطانوی وزیر اعظم رشی سونک نے انہیں فون پر مبارکباد پیش کی۔

حمزہ یوسف کا کہنا تھا برطانوی وزیر اعظم سے فون پر گفتگو تعمیری تھی، برطانوی وزیراعظم سے کہا کہ اسکاٹ لینڈ کے عوام اور پارلیمنٹ کی جمہوری خواہشات کا لندن کو احترام کرنا چاہیے۔

رشی سونک کا کہنا تھا برطانیہ اور اسکاٹ لینڈ کی حکومتوں کو پالیسی معاملات پر مل کر کام کرنا چاہیے۔

خیال رہے کہ حمزہ یوسف مغربی یورپی ملک کی حکومت کے پہلے مسلمان سربراہ ہیں، 37 سالہ حمزہ یوسف اسکاٹش نیشنل پارٹی کے سب سے کم عمر سربراہ بھی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں