رات کو دیر سے کھانا کھانے کے 3 فوائد اور تین نقصانات کے بارے میں ہم کیا جانتے ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
5 منٹس read

سنہ 2021 کے انٹرنیشنل نیوٹریشن انفارمیشن کونسل کے سروے میں انکشاف ہوا ہے کہ امریکا میں 60 فی صد بالغ افراد رات 8 بجے کے بعد کھانا کھانے کا اعتراف کرتے ہیں۔ ’ایٹنگ ویل‘ ویب سائٹ کے مطابق ایک سال قبل جرنل نیوٹریئنٹس سائنسی جریدے میں شائع ہونے والی تحقیق میں بتایا گیا ہے ناشتے بالغوں کے لیے غذائی توانائی کے کل ذرائع میں سے 20 فیصد ہیں۔

رات گئے اسنیکس کھانے کے ممکنہ فوائد اور نقصانات ہیں، لیکن یہ بھی ممکن ہے کچھ غلطیوں سے گریز کرتے ہوئے انسان صحت مند کھانے کی عادات کو برقرار رکھ سکتا ہے۔

صحت کے فوائد

دیر سے رات کا کھانا درج ذیل حوالے سےمفید ہوسکتا ہے۔

1. جسم کی پرورش

رات کو دیر تک کھانا کھانا آپ کے جسم کو ضروری غذائی اجزاء فراہم کرنے کا ایک موقع ہو سکتا ہے جو اس سے دن کے وقت ضائع ہو سکتا ہے۔ غذائیت سے بھرپوراور کم سے کم پروسس شدہ کھانے کا انتخاب کریں جیسے بیر کے ساتھ یونانی دہی، بسکٹ کے ساتھ پورے اناج کے کریکر، یا بھوک کو پورا کرنے اور اپنے جسم کو وٹامنز اور معدنیات سے پرورش کرنے کے لیے مخلوط گری دار میوے کا ایک چھوٹا حصہ مفید ہوسکتا ہے۔

رجسٹرڈ غذائی ماہر کیلیس کونک کہتے ہیں کہ سونے سے پہلے پروٹین سے بھرپور غذائیں کھانے سے آرام اور صحت یابی میں مدد مل سکتی ہے اگر کوئی شخص جسمانی طور پر متحرک ہے تو اسےرات کو کھانا کھانے سے جسم کو غذائی اجزاء فراہم کرنے میں مدد مل سکتی ہے، جیسے کہ پروٹین، جو آپ سوتے وقت پٹھوں کی بحالی کے لیے ضروری ہیں۔

سونے سے پہلے ہلکا متوازن کھانا کھانے سے رات میں بھوک کی وجہ سے بیداری کو روک کر بہتر نیند کو فروغ مل سکتا ہے۔ ACSM کے جرنل آف ہیلتھ اینڈ فٹنس کی تحقیق میں 2018ء کے مضمون سے پتہ چلتا ہے کہ اگر کوئی شخص رات کو بھوکا ہو تو سونے سے پہلے صحت بخش ہلکا کھانا اچھی نیند کی مشق ہے۔ ایسے ناشتے کا انتخاب کریں جس میں ٹرپٹوفن سے بھرپور غذائیں جیسے گری دار میوے یا بیج ہوں، جو جسم کو نیند کو کنٹرول کرنے والے نیورو ٹرانسمیٹر جیسے سیروٹونن اور میلاٹونن پیدا کرنے میں مدد کر سکتے ہیں۔

3. بلڈ شوگر کو ریگولیٹ کرنا

سنہ 2022ء میں امریکن جرنل آف کلینیکل نیوٹریشن میں شائع ہونے والے ایک سائنسی جائزے کے مطابق رات گئے اسنیکس کھانے سے جس میں پروٹین سے بھرپور غذائیں شامل ہوں، رات بھر بلڈ شوگر کی سطح کو مستحکم رکھنے میں مدد دے سکتی ہے۔ کھانے جو پروٹین، صحت مند چکنائی اور پیچیدہ کاربوہائیڈریٹس کو یکجا کرتے ہیں، جیسے نٹ مکھن کے ساتھ سیب کی چٹنی یا ایوکاڈو کے ساتھ ہول گرین ٹوسٹ وغیرہ وہ مفید ہوسکتے ہیں۔

ممکنہ منفی اثرات

دوسری طرف رات گئے کھانے کے منفی اثرات کی فہرست میں درج ذیل نکات شامل ہیں۔

1. ہاضمے کے مسائل

انٹرنیشنل جرنل آف انوائرمنٹل ریسرچ اینڈ پبلک ہیلتھ میں شائع ہونے والے 2020 کے ایک مضمون کے مطابق رات گئے کھانے سے نیند کے دوران معدے کی تکلیف ہو سکتی ہے، جیسے بدہضمی، سینے میں جلن اور ایسڈ ریفلکس۔ لہٰذا چکنائی یا مسالہ دار کھانوں سے پرہیز کریں اور ہضم کرنے میں آسان نمکین کھانوں کا انتخاب کریں، جیسے دلیا کا ایک چھوٹا پیالہ یا بادام کے مکھن کے ساتھ کیلا۔

2. بے خوابی

ڈاکٹر کونک کہتے ہیں کہ "وہ کھانے جو ہضم کرنے میں بہت زیادہ محنت کرتے ہیں، جیسے کہ زیادہ چکنائی والی غذائیں یا چکنائی والے یا میٹھے کھانے،یہ کھانے والے شخص کے رات بھر زیادہ کثرت سے جاگنے کا سبب بنتا ہے"۔

3. وزن میں اضافہ

دیر رات کا ناشتہ اکثر بوریت یا عادت سے باہر کیا جاتا ہے، جس کا مطلب ہے کہ وہ شخص بہت زیادہ کیلوریز کھا رہا ہے، جس سے وزن میں غیر ارادی اضافہ ہوتا ہے۔

"دیر سے رات کا کھانا کھانا وزن میں اضافے کا باعث بن سکتا ہے، خاص طور پر اگر اسے ٹی وی دیکھتے ہوئے کھایا جائے یا کوئی اور سرگرمی جہاں کسی شخص کو معلوم نہ ہو کہ وہ کیا کھا رہا ہے۔ کیونکہ اس سے زیادہ کھانا کھا جانا اس سے زیادہ آسان ہے جتنا کہ وہ کھاتا۔ ڈاکٹر کونک نے متنبہ کیا کہ لوگوں کو غذائیت سے بھرپور غذاوں کو منتخب کرنے پر توجہ دینی چاہیے جن میں شکر اور سیر شدہ چکنائی کم ہو، جس میں پروٹین اور ریشوں سے بھرپور اسنیکس پر توجہ مرکوز کی جائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں