شام میں الحشد ملیشیا کے ٹھکانے پرحملے میں اسرائیل کا ہاتھ ہوسکتا ہے: امریکی عہدیدار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایک سینیر امریکی عہدیدار نے کہا ہے کہ انہیں اس بات کا یقین ہے کہ عراق کی سرحد سے متصل شام کے شہر البوکمال میں اتوار کی شب فضائی حملہ اسرائیل نے کیا تھا۔ اس فضائی حملے میں عراقی شیعہ ملیشیا الحشد الشعبی اور دیگر ایران نواز ملیشیا کے عناصر کو نشانہ بنایا گیا۔

امریکی حکومت کے ایک عہدیدار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر ’اے ایف پی‘ ہمارے پاس ایسے ٹھوس اسباب موجود ہیں جن کی بنیاد پر یہ یقین کیا جاسکتا ہے کہ اتوار کی شب البوکمال شہر میں ہونے والے فضائی حملے میں اسرائیل ملوث ہوسکتا ہے۔

یاد رہے کہ اتوار اور سوموار کی درمیانی شب البوکمال شہر میں ہونے والے حملے کے نتیجے میں الحشد الشعبی ملیشیا کے 22 جنگجو ہلاک اور 12 زخمی ہوگئے تھے۔ شامی حکومت نے اس کارروائی کی ذمہ داری امریکا اور اس کی قیادت میں عالمی فوجی اتحاد پرعاید کی تھی تاہم امریکا نے اسد رجیم کا دعویٰ مسترد کردیا تھا۔

شام میں انسانی حقوق کی صورت حال پرنظر رکھنے والےادارے’آبزرویٹری‘ کے مطابق اتوار کی شب نامعلوم جنگی طیاروں نے البوکمال میں فضائی حملے کرکے 52 ایران نواز جنگجوؤں کو قتل کردیا تھا۔ ان میں سے 30 جگجوؤں کا تعلق عراق اور سولہ کا شام سے بتایا جاتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں