.

یمنی فوج کا صوبہ حجہ میں ’’ عاہم مثلث ‘‘ پر دوبارہ قبضہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کی قومی فوج نے شمال مغربی گورنری حجہ میں واقع عاہم مثلث پر دوبارہ قبضہ کر لیا ہے اور اس سے متصل واقع دیہات پر بھی کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔

یمنی فوج اس علاقے میں عرب اتحاد کی مدد سے حوثی شیعہ باغیوں کے خلاف لڑرہی ہے۔یمنی فوج کے ذرائع نے بتایا ہے کہ مسلح افواج نے عاہم تکون سے مشرق اور شمال میں واقع متعدد دیہات پر کنٹرول حاصل کرلیا ہے اور باقی دیہات پر کنٹرول کے لیے حوثی باغیوں کے خلاف لڑائی جاری رکھی ہوئی ہے۔

یمنی فوج کے میڈیا دفتر نے اطلاع دی ہے کہ عرب اتحاد ی فوج کے لڑاکا جیٹ نے حوثی ملیشیا کے ٹھکانوں ، اجتماعات اور ان کے لیے آنے والی کمک پر بمباری کی ہے جس کے نتیجے میں حوثیوں کی متعدد فوجی گاڑیاں تباہ ہوگئی ہیں۔

عاہم مثلث کو یمن کے اس علاقے میں بڑی تزویراتی اہمیت حاصل ہے۔ یہ اس کے شمال میں واقع شہروں حرض ، میدی ، جنوبی شہر حیران اور مشرق میں واقع نظامتوں حجور ، مستبا اور بکیل المیر کے درمیان ایک سنگم ہے ۔اسی سنگم پر دوصوبے صعدہ ، عمران کا حرض ، میدی اور الحدیدہ سے ملاپ ہوتا ہے۔

یمنی فوج کے اس تزویراتی اہمیت کی حامل تکون پر کنٹرول کو الحدیدہ میں گھیرے میں آئی ہوئی حوثی شیعہ ملیشیا کے لیے ایک بڑا فوجی دھچکا قرار دیا جارہا ہے اور یہ بھی فوج کی دارالحکومت صنعاء اور الحدیدہ کے درمیان شاہراہ کو منقطع کرنے ایسی جنگی کامیابی ہے۔