.

امریکا فرات کے مشرق میں "کُرد کارڈ" کھیل رہا ہے : روس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روس کے وزیر خارجہ سرگئی لاؤروف کا کہنا ہے کہ شام میں امریکا کی پالیسی کا ایک عنصر "کُرد کارڈ" کا استعمال کرنا ہے۔

روسی وزیر خارجہ کے مطابق فرات کے مشرق میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ شامی اراضی سے متعلق بنیادی اصولوں پر جمے رہنے کی صریح خلاف ورزی ہے۔ انہوں نے باور کرایا کہ کُرد کارڈ نہ صرف شام کے لیے خطر ناک ہے بلکہ اس کے سنگین اثرات عراق، ایران اور ترکی تک پھیل رہے ہیں۔

اِدلب کے حوالے سے لاؤروف کا کہنا تھا کہ وہاں موجود تمام مسلح شدت پسند عناصر نے ابھی تک ہتھیاروں سے پاک مجوزہ علاقے سے انخلاء پر عمل درامد نہیں کیا ہے۔ ان کے مطابق پوتین اور ایردوآن نے شدت پسندوں کی اُن کوششوں کو ناکام بنانے کے لیے کافی اقدامات پر اتفاق رائے کیا ہے جو وہ اس اہم سمجھوتے کو سبوتاژ کرنے کے واسطے کر رہے ہیں۔

ادھر توقع ہے کہ واشنگٹن میں آئندہ دو روز کے دوران شام سے متعلق "چھوٹے گروپ" میں شامل ممالک کے عہدے داران کا اجلاس منعقد ہو گا۔ اس گروپ میں برطانیہ، فرانس، جرمنی، سعودی عرب، مصر اور اردن شامل ہیں۔