الجزائری صدر بوتفلیقہ نظامِ تنفس اور اعصاب کے مسائل سے دوچار : سوئس اخبار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

الجزائر کے علیل صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ نظام ِتنفس اور اعصاب کے سنگین مسائل سے دوچار ہیں ۔سوئٹزر لینڈ سے شائع ہونے والے فرانسیسی زبان کے اخبار ٹرائبیون ڈی جنیوا نے اپنی بدھ کی اشاعت میں اطلاع دی ہے کہ الجزائری صدر کو انتہائی نگہداشت کی ضرورت ہے ،ان کا اعصابی نظام کمزور ہوچکا ہے اور وہ جواب نہیں دے پارہا ہے۔

اخبار کے مطابق وہ اس وقت جنیوا یونیورسٹی اسپتال کی آٹھویں منزل پر زیرِ علاج ہیں۔ان کا نظام تنفس اچانک بگڑ گیا ہے اور اس وجہ سے ان کی زندگی خطرے سے دوچار ہے۔اس لیے انھیں مسلسل نگہداشت کی ضرورت ہے۔

ادھر الجزائر میں عبدالعزیز بوتفلیقہ کے پانچویں مدتِ صدارت کے لیے امیدوار بننے کے خلاف احتجاجی مظاہرے جاری ہیں۔ دارالحکومت الجزائر اور دوسرے شہروں کے علاوہ فرانس میں مقیم ہزاروں الجزائریوں نے بھی گذشتہ چند روز کے دوران میں دارالحکومت پیرس اور دوسرے شہروں میں عبدالعزیز بوتفلیقہ کے صدارتی انتخاب لڑنے کے خلاف احتجاجی مظاہرے کیے ہیں اور ان سے بہ طور امیدوار دستبردار ہونے کا مطالبہ کیا ہے۔

الجزائر میں صدر بوتفلیقہ کے خلاف دو ہفتے قبل احتجاجی مظاہرے شروع ہوئے تھے۔اس تحریک میں منقسم حزب اختلاف ، شہری گروپ اور طلبہ پیش پیش ہیں لیکن تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ اس تحریک کا کوئی لیڈر ہے اور نہ یہ منظم ہے۔اس لیے حکومت اس کے دباؤ کا شکار ہوتی نظر نہیں آرہی ہے۔

علیل بوتفلیقہ کی انتخابی مہم کے مینجر عبدالغنی زعلان نے اگلے روز ان کے بہ طور صدارتی امیدوار آئینی کونسل کے ہاں کاغذات نامزدگی جمع کرانے کے بعد ایک نشری بیان میں کہا تھا کہ عبدالعزیز بوتفلیقہ اپریل میں پانچویں مرتبہ صدر منتخب ہونے کی صورت میں ایک سال کے اندر الجزائر میں نئے صدارتی انتخابات کرادیں گے جن میں ان کے ممکنہ جانشین کا انتخاب کیا جائے گا اور وہ اقتدار سے سبکدوش ہوجائیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں