الجزائر شہریوں‌ کے پرامن احتجاج کا حق تسلیم کرے: امریکا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکا نے الجزائرمیں صدرعبدالعزیز بوتفلیقہ کی پانچویں بار صدارتی انتخابات میں حصہ لینے کے خلاف ہونے والے احتجاج روکنے کی کوششوں پر تشویش کا اظہار کیا ہے اور ساتھ الجزائرکی حکومت پر زور دیا ہے کہ وہ عوام کے پرامن احتجاج کے حق کو تسلیم کرے اور مظاہرین کے خلاف طاقت کے استعمال کے پالیسی سے گریز کیا جائے۔

خیال رہے کہ صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ کی پانچویں بار صدارتی انتخابات میں حصہ لینے کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کرانے کے بعد ملک کے مختلف شہروں میں ہزاروں افراد سڑکوں پر نکل آئے اور انہوں نے حکومت کے خلاف شدید احتجاج اور صدر بوتفلیقہ کی پانچویں بار نامزدگی کے مظاہرے کیے ہیں۔

امریکی وزارت خارجہ کے ترجمان رابرٹ پالا ڈینو نےواشنگٹن میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ہم الجزائر میں ہونے والے احتجاج پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔ اس حوالےسے الجزائرکی حکومت کے ساتھ بھی ہمارے روابط موجود ہیں۔ امریکانے بتا دیاہے کہ واشنگٹن الجزائر میں عوام کے ساتھ اور پرامن احتجاج کرنے والوں کی حمایت کرتا رہےگا۔

تاہم ترجمان نے احتجاج کے اسباب اور محرکات یا صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ کی پانچویں بار نامزدگی کے‌حوالے سے کوئی بات نہیں کی۔

الجزائر میں 22 فروری کو اس وقت ملک گیرمظاہرے شروع ہوگئےتھے جب عمررسیدہ صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ نے پانچویں بار صدارتی انتخابات میں حصہ لینے کا اعلان کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں