.

سویڈن میں ایران کے لیے جاسوسی کےا لزام میں عراقی صحافی گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سویڈن میں ایران کے لیے جاسوسی کے الزام میں ایک عراقی صحافی کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

برطانوی اخبار ڈیلی ٹیلی گراف کی رپورٹ کے مطابق سویڈش دارالحکومت اسٹاک ہوم میں مقیم عراقی صحافی رغدان الخزالی کو ایران کے اقلیتی گروپ عرب اہوازیوں کی ایرانی حکومت کے لیے جاسوسی کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے۔

الخزالی یورپ سے تعلق رکھنے والے اخبار یورو ٹائمز کے اسٹاک ہوم میں نمایندہ تھے۔ ٹیلی گراف نے لکھا ہے کہ ’’انھیں ایک شخص کے خلاف سنگین غیر قانونی انٹیلی جنس سرگرمیوں میں ملوث ہونے کے الزام میں پکڑا گیا تھا اور وہ اس وقت اپنے خلاف مقدمے کی سماعت سے قبل زیرِ حراست ہیں ‘‘۔

ایرانی حکومت پر ماضی میں یورپ میں مقیم ایرانی حزب اختلاف کے ارکان کے قتل احکامات جاری کرنے کے الزامات عاید کیے جاتے رہے ہیں۔

2017ء میں اہواز ی عربوں کے ایک قوم پرست گروپ نیشنل لبریشن موومنٹ اہواز کے ایک لیڈر احمد ملا نسی کو نیدر لینڈز میں قتل کردیا گیا تھا۔

جنوری میں نیدر لینڈز نے ایران پر ڈچ سرزمین پر دو حکومت مخالفین کے قتل میں ملوّث ہونے کا الزام عاید کیا تھا ۔مقتولین میں احمد نسی بھی شامل تھے۔ انھیں دا ہیگ میں قتل کیا گیا تھا۔
ڈچ وزیر خارجہ اسٹیف بلاک نے پارلیمان کے نام ایک خط میں لکھا تھا کہ ’’ ڈچ سیکرٹ سروس کو ایسے مضبوط اشارے ملے تھے کہ ایران دو ایرانی نژاد ڈچ شہریوں کے قتل میں ملوث ہے۔ان میں سے ایک کو 2015ء میں المیرے اور ایک کو 2017ء میں دا ہیگ میں قتل کیا گیا تھا‘‘۔

بلاک کا کہنا تھا کہ ’’ یہ افراد ایرانی رجیم کے مخالفین تھے ۔نیدر لینڈز کو شُبہ ہے کہ ایران نے یورپی یونین کی سرزمین پر انھیں قتل کیا تھا یا ان پر حملوں کی منصوبہ بندی کی تھی‘‘۔