شام میں 34 تُرک فوجیوں کی ہلاکت پر اسرائیل کی تعزیت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل نے شام کے شہر ادلب میں فضائی بم باری میں 34 ترک فوجیوں کی ہلاکت پر جمعے کے روز ترکی کے حکام کو تعزیت پیش کی ہے۔ ترکی میں اسرائیلی سفارت خانے نے اپنے سرکاری ٹویٹر اکاؤنٹ پر جاری بیان میں کہا کہ "اسرائیلی سفارت خانہ گذشتہ رات ترکی کے فوجیوں کی ہلاکت پر اپنے گہرے رنج کا اظہار کرتا ہے۔ ہم زخمیوں کے لیے ہمدردی کے جذبات رکھتے ہیں اور اپنی جانوں کو گنوانے والے فوجیوں کے اہل خانہ سے تعزیت کرتے ہیں"۔

ترکی نے اعلان کیا تھا کہ ادلب (شام) میں ترکی کے فوجی قافلے پر حملے میں ہلاک ہونے والے فوجیوں کی تعداد 33 ہو گئی۔ ان کے علاوہ کئی دیگر فوجیوں کو خطرناک زخم آئے ہیں جن کا علاج ہاتے میں ہو رہا ہے۔ ترکی کے صدر رجب طیب ایردوآن نے اس حملے کا ذمے دار شامی حکومت کو ٹھہرایا ہے۔

ترکی نے جمعے کے روز بین الاقوامی گروپ پر زور دیا کہ شام کے شمال مغرب میں نو فلائی زون قائم کیا جائے تا کہ شامی حکومت اور اس کے حلیف روس کے طیاروں کو فضائی حملوں سے روکا جا سکے۔

ترکی نے روس کی اس تاویل کو مسترد کر دیا کہ جمعرات کے روز ادلب صوبے میں شامی حکومت کی بم باری میں ہلاک ہونے والے 33 ترک فوجی "دہشت گرد گروپوں" کے بیچ موجود تھے۔

ترکے کے وزیر دفاع حلوصی آکار کے مطابق مذکورہ حملے کے وقت ترکی کے فوجی یونٹوں کے گرد کوئی مسلح گروپ موجود نہیں تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں