.

ایتھوپیا میں مسلح ‌تصادم، 100 سے زاید افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مغربی ایتھوپیا میں بدھ کے روز مسلح افراد نے ایک حملے میں 100 سے زائد افراد کو ہلاک کر دیا۔ نیشنل اتھارٹی فار ہیومن رائٹس کے مطابق اس علاقے میں خونی حملوں کا یہ تازہ واقعہ ہے جس میں ایک ہی روز میں دسیوں افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا گیا ہے۔

بدھ کے روز ایتھوپیا کے انسانی حقوق کمیشن نے ایک بیان میں کہا کہ مغربی ایتھوپیا کے علاقے بینیشانگ-گومیز میں مسلح افراد کے حملے میں 100 سے زیادہ افراد کو گولی مار دی گئی۔

علاقہ مکینوں نے مسلح حملے میں درجنوں افراد کی ہلاکت کی تصدیق کی اور بولین شہر میں ایک کسان نے بتایا کہ اسے اپنے گھر کے قریب کھیت میں درجنوں لاشیں نظر آئیں۔

قصبے کے ایک اور رہائشی نے بتایا کہ مسلح افراد نے صبح 6 بجے اس علاقے میں دھاوا بولا درجنوں افراد کو ہلاک کیا۔ اس نے 20 لاشیں مختلف جگہ پر دیکھیں۔

ایک مقامی ڈاکٹر نے انکشاف کیا کہ اس نے اور ان کے ساتھیوں نے 38 زخمیوں کو فوری طبی امداد فراہم کی۔ ان لوگوں کو گولیوں کے زخم آئے تھے۔

ایک مقامی نرس نے بتایا کہ ہم اس معاملے کے لیے تیار نہیں تھے اور ہمارے پاس ادویہ ختم ہوگئی تھی۔ پانچ سالہ لڑکے کی کلینک منتقل کرنے کے دوران اس کی موت واقع ہوگئی۔

کشیدگی کا شکار علاقے کے ایک عہدیدار نے اپنا نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ حکام کو حملے کی اطلاع دی گئی ہے اور وہ حملہ آوروں اور متاثرین کی شناخت کے بارے میں تفصیلات جمع کر رہے ہیں۔