.

مشکل وقت میں تونس کے ساتھ کھڑے ہیں : سعودی عرب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب نے باور کرایا ہے کہ وہ تونس کے امن و استحکام کی سپورٹ کے واسطے اس کے ساتھ کھڑا ہے۔ مملکت نے زور دیا ہے کہ اسے تونس کی قیادت پر اعتماد ہے کہ وہ موجودہ صورت حال سے گزر جائے گی۔ سعودی عرب نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ صحت اور معیشت سے متعلق چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لیے تونس کے شانہ بشانہ کھڑی ہو۔

سعدی سرکاری خبر رساں ایجنسی (ایس پی اے) کے مطابق مذکورہ موقف منگل کے روز سعودی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں سامنے آیا۔ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ سعودی عرب کی حکومت برادر ملک تونس کو درپیش صورت حال اور تمام پیش رفت کا جائزہ لے رہی ہے۔ تونس کے ہر اندرونی معاملے کو اس کی خود مختاری سے متعلق شمار کرتے ہیں۔ تونس کے برادر عوام کی ترقی اور خوش حالی کے متمنی ہیں۔

تونس کے صدر قیس سعید نے اتوار کے روز آئین کی دفعہ 19 کے تحت حاصل ہنگامی اختیارات کا استعمال کرتے ہوئے وزیر اعظم ہشام میشیشی کو برطرف کر دیا تھا اور پارلیمان کو 30 روز کے لیے معطل کر دیا تھا۔ صدر نے منگل کے روز بھی حکومت میں اعلی منصبوں پر فائز متعدد ذمے داران کو فارغ کر دیا۔