روس اور یوکرین

پوتین کا یوکرین کو شکست دینے کا منصوبہ ناکام ہو گیا ہے:وائٹ ہاؤس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

یوکرین میں روسی فوجی آپریشن دوسرے ماہ سے جاری ہے۔دوسری طرف وائٹ ہاؤس نے کہا ہے کہ روسی صدر ولادیمیر پوتین کا کیف کوشکست دینے کا منصوبہ ناکام ہو گیا ہے۔

وائٹ ہاؤس کی ترجمان جین ساکی نے کہا کہ کریملن رہ نما یوکرین کو شکست دینے میں ناکام رہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ واشنگٹن یوکرین کو روس کے کسی بھی کیمیائی حملے کا مقابلہ کرنے کے لیے ساز و سامان فراہم کر رہا ہے۔

امریکی صدر جو بائیڈن نے ایک ہفتہ قبل کہا تھا کہ اگر روس نے یوکرین میں کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال کیا تو جواب دیا جائے گا۔

انہوں نے یہ بھی واضح کیا کہ واشنگٹن یوکرین کی مدد کے لیے اضافی دو بلین ڈالر مختص کرے گا جو روس پر غیرمعمولی اقتصادی پابندیوں کے مسلسل نفاذ کا اشارہ ہے۔

گذشتہ فروری سے جاری جنگ کے دوران یوکرینی فوج کو شکست دینے کے لیے روس نے بارہا جوہری ہتھیاروں کے استعمال کا امکان اٹھایا ہے جسے روسی حکومت ایک ’خصوصی آپریشن‘ سے تعبیر کرتی ہے۔

کریملن نے پہلے کہا تھا کہ ایسے ہتھیاروں کا استعمال صرف "وجود کے خطرے" کی صورت میں کیا جائے گا۔

قابل ذکرہے کہ 24 فروری کو اس آپریشن کے آغاز کے بعد سے روسی افواج شمال مشرق میں ہونے والی پیش رفت کے علاوہ یوکرین کے کسی بھی بڑے شہر پر مکمل کنٹرول نہیں کر پائی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں