ایرانی وزیرتیل کاوینزویلا کے صدرمادوروسے امریکی پابندیوں کے مضمرات پرتبادلہ خیال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ایران کے وزیرتیل نے وینزویلا کے سرکاری دورے کے موقع پر صدر نِکولس مادورو سے ملاقات کی ہے اور دونوں ممالک کے خلاف امریکی پابندیوں کے اثرات پر’’قابو پانے‘‘کے طریقوں پرتبادلہ خیال کیا ہے۔

مادورو نے ٹویٹر پر کہا کہ ’’میں نے برادر ملکاسلامی جمہوریہ ایران کے وزیرتیل عزت مآب جواد عوجی کا استقبال کیا اوران سے توانائی کے معاملات میں بھائی چارے اور تعاون کو گہرا کرنے کے لیے ایک نتیجہ خیز ملاقات کی ہے‘‘۔

وینزویلا کے سرکاری ٹیلی ویژن نے میرافلورس کے صدارتی محل میں ہونے والی ملاقات کی تصاویر دکھائی ہیں۔

وینزویلا کی وزارت تیل کے ایک بیان کے مطابق اس سے قبل عوجی نے اپنے ہم منصب طارق العیسامی سے ملاقات کی جس میں ’’امریکی حکومت اور اس کے اتحادی ممالک کی جانب سے مسلط کردہ یک طرفہ جبری اقدامات پر قابو پانے کے طریق کار اور میکانزم پر تبادلہ خیال کیا گیا‘‘۔

جواد عوجی نے وینزویلا کا یہ دورہ یوکرین کے خلاف جنگ کی وجہ سے تیل کی بڑھتی ہوئی عالمی قیمتوں کے تناظر میں امریکی حکام کے دورے کے چند ہفتے کے بعد کیا ہے۔ وینزویلا دنیا میں خام تیل کے سب سے بڑے ثابت شدہ ذخائر کا مالک قراردیا جاتا ہے۔

مارچ میں ایک امریکی وفد نے مادورو کے ساتھ ایک خفیہ ملاقات کی تھی حالانکہ واشنگٹن ان کی صدارت کی قانونی حیثیت کو چیلنج کرتا رہا ہے اور اس نے وینزویلا کی حزب اختلاف کی ملک میں ہنگاموں کے لیے پشت پناہی کی تھی۔

ایران تیل پیدا کرنے والا اوپیک تنظیم کا بڑا ملک ہے اور اس نے گذشتہ ماہ کہا تھا کہ 2018ء میں امریکی پابندیوں کے دوبارہ نفاذ سے قبل کی پیداواری صلاحیت حاصل کرلی ہے۔

وینزویلا کے وزیرتیل طارق العیسامی نے پیر کے روز انسٹاگرام پر ایک ویڈیو پوسٹ کی ہے جس میں وہ جواد عوجی کا مصافحہ کے ساتھ اپنے دفتر میں استقبال کر رہے ہیں۔

وینزویلا کے سابق سوشلسٹ رہ نما ہیوگوشاویز(1999-2013) کے دور میں دونوں تیل پیدا کرنے والے ملکوں کے درمیان دو طرفہ تعلقات مضبوط ہوئے تھے اور ان کے جانشین مادورو کے دور میں انھیں مزید تقویت ملی۔

امریکا مخالف وینزویلا ایران، روس اور چین کا مضبوط اتحادی ہے۔ امریکا کی سخت پابندیوں کے نتیجے میں اس کی ایک بار پھلتی پھولتی تیل کی صنعت بری طرح متاثر ہوئی ہے۔

مارچ میں مادورو کے ساتھ ہونے والی ملاقات پرواشنگٹن میں سوالات اٹھائے گئے ہیں اس کے بعد وائٹ ہاؤس نے واضح کیا کہ وہ تیل کی درآمد کے حوالے سے وینزویلا کے ساتھ ’’فعال بات چیت‘‘نہیں کررہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں