کیا جوبائیڈن کو نہیں پتا کہ امریکا کی 50 ریاستیں ہیں؟

امریکی صدرکی ایک اور فاش غلطی، امریکا کی 50 کے بجائے 54 ریاستیں قرار دیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی صدر جوبائیڈن اپنی پیرانہ سالی کی وجہ سے بعض اوقات کچھ ایسی حرکتیں کرجاتے ہیں جن کی وجہ سے وہ میڈیا کی توجہ کا مرکز بن جاتے ہیں۔ تقریر کے دوران لوگوں کا نام بھول جانا یا راستہ بھول جانا عام سی باتی ہے۔ گذشتہ روز انہوں نے ایک ایسی فاش غلطی کی جس کی توقع نہیں کی جا سکتی تھی۔ انہوں نے کہا کہ امریکا کی 54 ریاستیں ہیں حالانکہ وہ جس ملک امریکا کے صدر ہیں اس کی ریاستوں کی تعداد 50 ہے۔

سوشل میڈیا پر ان کے ناقدین نے اس غلطی کو گھناؤنا، خوفناک اور ناقابل معافی قرار دیا۔ ۔ جوبائیڈن نے گزشتہ جمعے کی شام پنسلوانیا میں ڈیموکریٹک پارٹی کے استقبالیہ میں تقریر کرتے ہوئے "اوبامہ کیئر" صحت پروگرام کے نظام کا دفاع کیا اور کہا کہ یہ قانون سابق صدر براک اوباما نے2018ء میں نافذ کیا تھا جس کے بعد ڈیموکریٹس نے اس سال کے وسط مدتی انتخابات میں کانگریس کی اکثریتی نشستیں حاصل کیں۔

اپنی تقریر میں بائیڈن جو 20 نومبر کو 80 سال کے ہوجائیں گے نے اس بارے میں الجھے ہوئے نوٹ دیے کہ ان کی انتظامیہ کس طرح صحت کی دیکھ بھال کو بہتر بنا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ "ہم 54 ریاستوں میں گئے تاکہ ادویات کی کمپنیوں کو ان کی قیمتوں میں اضافے سے روکا جا سکے، اس لیے ہم نے انہیں 2018 میں شکست دی جب انہوں نے ایسا کرنے کی کوشش کی،" اس کے 50 ریاستوں کے ملک میں 4 ریاستیں جو بالکل بھی موجود نہیں ہیں کے فقرے کو شامل کرنے کے باوجود بائیڈن نے اصرار کیا کہ وہ 2024 میں دوسری مدت کے لیے انتخاب لڑیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں