ایران میں ضمیر کے قیدیوں کو غیر مشروط رہا کیا جائے: واشنگٹن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

کل سوموار کوامریکی محکمہ خارجہ نے ایران میں ضمیر کے قیدیوں کی غیر مشروط رہائی کا مطالبہ کیا ہے۔

امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے پرامن طریقے سے اپنی آزادیوں کا استعمال کرنے پر ایران میں قید تمام افراد کی غیر مشروط رہائی کا مطالبہ کیا۔

’ٹویٹر‘ پر پرائس نے اس ماہ کے شروع میں اقوام متحدہ کی خواتین کی کمیٹی سے تہران کے اخراج کے بعد ایران کی خواتین کے لیے واشنگٹن کی حمایت کا حوالہ دیا۔

امریکی ترجمان نے مزید کہا کہ ایرانی خواتین کی اپنے حقوق تک رسائی کے لیے جدوجہد جاری ہے۔

امریکی سینیٹ کی خارجہ تعلقات کمیٹی نے صدر جو بائیڈن کی انتظامیہ کی تعریف کی ہے کہ جو ایران میں مظاہروں کے خلاف "اندھا دھند تشدد" کے مرتکب اہلکاروں کو ذمہ داروں کو جوابدہ ٹھہرا رہی ہے۔

کمیٹی نے اتوار کے روز اپنے ’ٹویٹر‘ اکاؤنٹ پر کہا کہ اسے ایرانی حکومت کی طرف سے مقدمے اور پھانسیوں کی بڑھتی ہوئی رفتار کا "زبردست جواب" دینا چاہیے۔

ایران میں مظاہرے 100 دن سے تجاوز کرگئے ہیں۔ حکومت کی جانب سے اس پر وحشیانہ دباو ڈالنے اور دہشت پھیلانے کے لیے کچھ شرکاء کوپھانسی دینے کے باوجود بعض شہروں میں سخت موسم اور برف باری میں بھی احتجاج جاری ہے۔

ایران میں زبردست مظاہروں کے 100 دن بعد بھی ایرانی حکام مظاہرین کے مطالبات بشمول لباس کی آزادی کے مطالبات کو مغربی حکومتوں بشمول امریکہ اور برطانیہ کی "سازش" قرار دیتے ہیں، جنہیں ایرانی حکومت "دشمن" قرار دیتی ہے۔ "

پیر کے روز ایرانی پاسداران انقلاب نے وسطی ایران کے صوبہ کرمان میں سات افراد کی گرفتاری کا اعلان کیا، جن میں دوہری شہریت کے حامل شہری بھی شامل تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں