سعودی ویژن 2030

سعودی عرب 2022ء میں سیاحوں کی آمد کے لحاظ عرب ممالک میں پہلے نمبرپر!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب نے 2022 کے پہلے نو ماہ کے دوران میں کسی بھی دوسرے عرب ملک کے مقابلے میں سب سے زیادہ بین الاقوامی سیاحوں کا خیرمقدم کیا ہے جبکہ حکومت نے ویژن 2030ء کے تحت اس دہائی کے آخرتک 10 کروڑ سالانہ زائرین اور سیاحوں کی آمد کا ہدف مقررکیا ہے۔مملکت کا ترقی کرتا سیاحتی شعبہ عرب ٹریول مارکیٹ (اے ٹی ایم) 2023 میں کلیدی توجہ حاصل کرے گا۔یہ نمائش یکم سے 4 مئی تک دبئی ورلڈ ٹریڈ سینٹر (ڈی ڈبلیو ٹی سی) میں منعقد ہوگی۔

اس سال کی سعودی سمٹ عالمی سطح پر منعقد ہوگی۔ اس میں علاقائی سفر اور سیاحت کے منظرنامے کو نئی شکل دینے میں مملکت کی اہمیت پر توجہ مرکوز کی جائے گی جبکہ سیاحتی شعبے میں کئی ایک میگامنصوبوں پر کام جاری ہے۔

سمٹ کے علاوہ اے ٹی ایم 2023 میں سعودی ایئرلائنزالسعودیہ اور فلائی ناس ، مکہ کلاک رائل ٹاور ، اسماء ہاسپٹیلٹی کمپنی ، آئی آف ریاض ، اٹرپ ، در ہاسپٹیلٹی ، سدانا رئیل اسٹیٹ کمپنی ، سعودی آمد فارایئر پورٹ سروسز اینڈ ٹرانسپورٹ سپورٹ سمیت متعدد سعودی نمائش کنندگان شرکت کریں گے۔

عرب ٹریول مارکیٹ کے ڈائریکٹرنمائش ڈینیئل کرٹس نے کہا:’’اے ٹی ایم 2023 سعودی سمٹ ایک مثالی فورم پیش کرے گی۔اس میں مشرقِ اوسط اور اس سے باہر کے ٹریول پروفیشنلزاور پالیسی ساز مملکت کے ترقی کرتے سیاحتی شعبے میں مواقع اورچیلنجز کو تلاش کرسکتے ہیں‘‘۔

کرٹس نے مزید کہا کہ’’نیوم اور بحیرہ احمر کے بڑے منصوبے سے لے کرترقیاتی اقدامات اور مملکت کی تازہ ترین ویزا اصلاحات اس کے سفری شعبے کو مضبوط بنارہی ہیں، ہم توقع کرتے ہیں کہ اے ٹی ایم کے آئندہ ایڈیشن کے دوران میں سعودی عرب ایک اہم قرعہ اندازی کی نمائندگی کرے گا‘‘۔

اقوام متحدہ کی ورلڈ ٹورازم آرگنائزیشن (یو این ڈبلیو ٹی او) کے جاری کردہ اعداد و شمار سے پتا چلتا ہے کہ سعودی عرب نے 2022 کی پہلی تین سہ ماہیوں میں ایک کروڑ 80 لاکھ سے زیادہ سیاحوں کا اندرون ملک خیرمقدم کیا ، اس کے بعد متحدہ عرب امارات ( ایک کروڑ 48 لاکھ سیاح) اور مراکش (ایک کروڑ 10 لاکھ سیاح) ہیں اوروہ عرب خطے میں بالترتیب دوسرے اور تیسرے نمبر پر ہیں۔

سعودی عرب کی وزارت سرمایہ کاری کی جانب سے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ سال مملکت میں سیاحت پرہونے والے اخراجات میں بھی اضافہ ہوا اور 2022 کی پہلی شش ماہی میں یہ 7.2 ارب ڈالر تک پہنچ گئے۔ دنیا بھر کے ٹریول ماہرین ان اعدادوشمار کو اے ٹی ایم 2023 میں مائیکرواسکوپ کے تحت رکھیں گے۔نمائش کے مختلف سیشنوں اور پینل مباحثوں میں بھی سعودی عرب میں سیاحتی شعبے میں ترقیاتی منصوبوں اور اس کے مختلف پہلوؤں کے بارے میں تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

اے ٹی ایم 2023 ء اپنے موضوع 'نیٹ زیرو کی جانب کام' کے مطابق پائیدار سفرکے مستقبل کی تلاش کرے گی۔ باضابطہ طور پر نیٹ زیرو(صفرکاربن) تک اپنے سفر کا آغاز کرنے کے بعد ،کانفرنس میں اس بات کا جائزہ لیا جائے گا کہ کس طرح جدیدپائیدارسفر کے رجحانات تیار ہونے کا امکان ہے،جس سے مندوبین کو اہم عمودی شعبوں میں ترقی کی حکمت عملی کی نشان دہی کرنے کی اجازت ملے گی ، جبکہ علاقائی ماہرین کو کوپ 28 سے قبل پائیدار مستقبل تلاش کرنے کے لیے ایک پلیٹ فارم فراہم ہوگا۔یہ عالمی موسمیاتی کانفرنس نومبر 2023 میں ایکسپوسٹی دبئی میں منعقد ہوگی۔

کانفرنس میں پہلی بار اس کے سالانہ نمائش کنندگان کے ایوارڈز میں پائیداری کا زمرہ بھی شامل کیا جائے گا۔ نمائش کرنے والی تنظیموں کواس بات کی بنیاد پر تسلیم کیا جائے گا کہ انھوں نے کس حد تک اپنے مؤقف کے ماحولیاتی اثرات پرغور کیا ہے ، اور ساتھ ہی ساتھ کاربن فٹ پرنٹ کوکم کرنے کی ان کی کوششوں پربھی غورکیا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں