بارش کا پانی رمسیس دوم کے مجسمہ تک پہنچ گیا، مصر میں کہرام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر میں اس وقت کہرام مچ گیا جب بارش کا پانی گرینڈ میوزیم کے اندر موجود رمسیس دوم کے مجسمہ تک پہنچ گیا۔ بارش اور مسجمہ کی ویڈیو جنگل میں آگ کی طرح سوشل میڈیا پر پھیل گئی۔ سارے مصر سے لوگوں کا زبردست رد عمل دیکھنے میں آیا۔ "اوہ، سفید دن"، "انہوں نے یہ مجھ میں چھپا دیا؟" ، "کیا سب کچھ یہ ہے؟" ان الفاظ کے ساتھ مصریوں نے اپنی حیرت کا اظہار کیا۔

سوشل میڈیا پر ویڈیو کے بڑے پیمانے پر پھیلنے سے لوگوں میں بڑی الجھن پیدا ہوگئی۔ اس کے بعد حکام نے مداخلت کرکے صورت حال کی وضاحت کی ۔

وسیع پیمانے پر پھیلنے والی ویڈیو میں مغرب سے پہلے کا عظیم الشان مصری عجائب گھر دکھایا گیا تھا۔ اس کے اندر گریٹ ہال کے اندر بادشاہ رمسیس دوم کے مجسمے پر شدید بارش ہو رہی تھی۔

ایسا پہلی مرتبہ نہیں ہوا

ہنگامہ آرائی کی وجہ سے گرینڈ مصری میوزیم اور اس کے آس پاس کے علاقے کے نگران میجر جنرل عاطف مفتاح نے تصدیق کی کہ بادشاہ رمسیس دوم کے مجسمے پر بارش کا گرنا معمول کی بات ہے اور ایسا پہلی مرتبہ نہیں ہو رہا۔

انہوں نے مزید کہا کہ میوزیم کے ڈیزائن کے باعث بارش سے مجسمے کو کوئی نقصان نہیں پہنچتا۔ انہوں نے وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ میوزیم کے اصل ڈیزائن میں یہ علاقہ اس طرح کھلا ہے جیسے مجسمہ چھتری کے نیچے ہو۔

انہوں نے مزید کہا کہ مجسمے کو بند جگہ پر رکھنا درست نہیں ہے ہے تاکہ ایئر کنڈیشننگ اور اس جیسے دیگر معاملات متاثر نہ ہوں۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ رمسیس دوم کے مجسمے کا مقام میوزیم کی عمارت اور تجارتی عمارت کے درمیان ایک علاقے میں آتا ہے۔ یہ ایک سایہ دار علاقہ ہے۔ اس کی چھت کا تخمینہ لگایا گیا ہے۔ وینٹیلیشن اور بارش کا حساب بھی لگایا گیا ہے۔ یہاں نکاسی آب کا راستہ بھی موجود ہے۔

واضح رہے کہ رمسیس دوم کا مجسمہ پچھلی صدی کی 50 کی دہائی سے لے کر 2006 تک الازبکیہ سکوائر میں موجود رہا تھا۔ یہ مجسمہ گرینائٹ سے بنا ہونے کی وجہ سے بارش سے متاثر نہیں ہوتا۔ حالیہ بارشوں کے باعث تجارتی علاقہ بھی متاثر نہیں ہوا کیونکہ یہ علاقہ مکمل طور پر ڈھانکا ہوا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں