پیرس فضائی شو کا آغاز؛سعودی فلائی ناس کاایئربس اے 320 کے 30 طیاروں کا آرڈر

بھارت کی فضائی کمپنی انڈیگو کا اپنے فضائی بیڑے کے لیے ایئربس سے 500 طیارے خرید کرنے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

فرانس کے دارالحکومت پیرس میں سوموار کو التوا کا شکار فضائی شو کا آغاز ہوگیا ہے۔اس موقع پر یورپ کی طیارہ ساز ایئربس نے تصدیق کی ہے کہ سعودی عرب کی فضائی کمپنی فلائی ناس نے اے 320 قسم کے مزید 30نیو فیملی طیاروں کا آرڈر دیا ہے۔

اس معاہدے کی اطلاع سب سے پہلے بلومبرگ نے دی تھی۔پیرس میں دنیا کا سب سے بڑا ایئر شو برطانیہ میں فارنبورو کے متبادل کے طور پر منعقد ہوتا ہے۔اس کا 2021 کا ایڈیشن کرونا کی وبا کی وجہ سے منعقد نہیں ہوا تھا اور اب یہ چار سال میں پہلی مرتبہ پیرس کے نواح میں واقع لی بور کے ہوائی اڈے پر منعقد ہورہا ہے۔

فرانسیسی صدر عمانوایل ماکرون نے ہیلی کاپٹر پر ایرو اسپیس بازار کا دورہ کیا اور ایئربس کے جدید ترین جیٹ کی تیاری، اے 321 ایکس ایل آر اور فرانسیسی رافیل لڑاکا طیارے سمیت فضائی طاقت کا مظاہرہ دیکھا۔اس شو میں امریکی ایف 35 لڑاکا طیارے نے بھی اڑان بھرنا تھی۔

بیلجیئم نے کہا ہے کہ وہ رافیل اور ملٹی نیشنل یورو فائٹر ، فرانکو،جرمن ،ہسپانوی ایف سی اے ایس لڑاکا منصوبے کے ممکنہ جانشین کے طور پر شامل ہونے کے لیے درخواست دے گا ، اس منصوبے کو وسعت دینے کے بارے میں صنعتی شراکت داروں کے درمیان اختلافات پائے جاتے ہیں۔

یہ ایئر شو یوکرین میں جاری تنازع کے تناظر میں ہو رہا ہے اور چار سال قبل ہونے والے آخری ایونٹ کے مقابلے میں اس میں کوئی روسی موجودگی نہیں ہے۔ البتہ یہ توقع کی جارہی تھی کہ یوکرین کے کچھ عہدے دار اور ایرو اسپیس کمپنیاں اس شو میں موجود ہوں گی۔

فرانس کے تھالس نے انڈونیشیا سے طویل فاصلے تک مار کرنے والے 13 فضائی نگرانی ریڈار کے معاہدے کا اعلان کیا ہے۔تجارتی طور پر ، طیارے بنانے والی کمپنیاں بڑھتی ہوئی طلب کی توقعات کے ساتھ پہنچی ہیں کیونکہ ایئرلائنز طلب کو پورا کرنے اور 2050 تک خالص صفر اخراج کے صنعتی اہداف کے حصول میں مدد کے لیے صلاحیت کی تلاش میں ہیں۔

لیکن انھیں اس مانگ کو پورا کرنے کے لیے بھی ایک چیلنج کا سامنا کرنا پڑتا ہے کیونکہ سپلائرز کرونا کی وَبا کے تناظر میں بڑھتی ہوئی لاگت، پرزوں کی کمی اور ہنر مند مزدوروں کی کمی سے نمٹنے کے لیے کوشاں ہیں۔

صنعت کے عہدے داروں کا کہنا ہے کہ دنیا بھر میں 2000 جیٹ طیاروں آرڈرز تجارتی جیٹ مارکیٹ میں دستیاب ہیں۔ان کا پہلے ہی عارضی طور پر اعلان کیا جا چکا ہے، کیونکہ فضائی کمپنیاں کرونا کی وبا کے دوران میں سرگرمیوں میں شدید کمی کی وجہ سے پیدا ہونے والے خلا کو پر کرنے کی کوشش کر رہی ہیں۔

انڈسٹری کے ذرائع نے اتوار کو بتایا کہ یورپ کی طیارہ ساز کارپوریشن ایئربس بھارت کی فضائی کمپنی انڈیگو اور میکسیکو کی کم قیمت ایئر لائن ویوا تنگ باڈی والے جیٹ طیاروں کے ممکنہ طور پر بڑے آرڈر کے قریب ہے اور +ج فضائی شو میں انڈیگو نے ایئربس سے چھوٹی باڈی والے پانچ سو طیارے خرید کرنے کا اعلان کیا ہے۔

انھوں نے بتایا کہ میکسیکو کی فضائی کمپنی کے زیر بحث طیاروں کی تعداد 100 سے زیادہ ہے، تاہم کچھ ذرائع نے کہا کہ حتمی معاہدے میں یہ تعداد 60 کے قریب ہوسکتی ہے۔میکسیکو کی فضائی کمپنی طویل عرصے سے بوئنگ اور ایئربس کے درمیان تجارتی میدان جنگ رہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں