سعودی عرب آیندہ ماہ کے اوائل میں یوکرین جنگ پر مذاکرات کی میزبانی کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب اگست میں یوکرین جنگ کے حوالے سے مذاکرات کی میزبانی کرے گا جس میں مغربی ممالک، یوکرین، بھارت اور برازیل سمیت ترقی پذیر اور ترقی یافتہ ممالک کو مدعو کیا جائے گا۔

امریکی اخبار وال اسٹریٹ جرنل نے ایک رپورٹ میں بتایا ہے کہ اس اجلاس میں انڈونیشیا، مصر، میکسیکو، چلّی اور زیمبیا سمیت 30 ممالک کے سینیر حکام شرکت کریں گے اور یہ اجلاس 5 اور 6 اگست کو جدہ میں ہوگا۔

یوکرین اور مغربی حکام کو امید ہے کہ یہ مذاکرات یوکرین کے حق میں امن شرائط کے لیے بین الاقوامی حمایت کا باعث بن سکتے ہیں۔ان مذاکرات میں روس شامل نہیں ہوگا۔

کریملن نے، جو یوکرین کے قریباً چھٹے حصے پر قابض ہونے کا دعویٰ کرتا ہے، کہا ہے کہ وہ یوکرین کے ساتھ امن مذاکرات کو صرف اسی صورت میں ممکن سمجھتا ہے جب کیف ’’نئی حقیقتوں‘‘ کو قبول کرے۔اس کااشارہ روسی فوج کے زیرقبضہ یوکرین کے علاقوں کی طرف تھا جبکہ یوکرین کا کہنا ہے کہ روس کے ساتھ مذاکرات صرف اس وقت ممکن ہوں گے جب ماسکوملک سے اپنی افواج واپس بلا لے گا۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مدعو ممالک میں سے ابھی تک یہ واضح نہیں کہ کتنے شرکت کریں گے۔البتہ جون میں کوپن ہیگن میں اسی طرح کے مذاکرات میں حصہ لینے والے ممالک کے نمایندوں کی جدہ میں آمد متوقع ہے۔

برطانیہ، جنوبی افریقا، پولینڈ اور یورپی یونین نے جدہ اجلاس میں شرکت کی تصدیق کی ہے اور امریکا کے قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیوان کی شرکت بھی متوقع ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں