ھانیبل قذافی کی طبیعت جیل میں تشویشناک ہوگئی ہے: وکیل دفاع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لیبیا کے مرحوم صدر معمر قذافی کے بیٹے ھانیبل قذافی کے وکیل دفاع نے جو لبنان میں 7 سال سے زائد عرصے سے نظر بند ہیں العربیہ کو دیے گئے بیانات میں اس بات کی تصدیق کی کہ جیل میں ان کی طبیعت بگڑ گئی اور وہ خطرناک مرحلے میں داخل ہو گئے ہیں۔ انہوں نے اپنی نبض میں تیزی سے کمی کے بعد انتہائی نگہداشت میں منتقل ہونے سے انکار کردیا ہے۔

ھانیبل کے دفاع نے تمام مجاز حکام کو اس کی حفاظت کے لیے ذمہ دار ٹھہرایا اور اس کی رہائی کے لیے مداخلت کا مطالبہ کیا ہے۔ العربیہ ذرائع کے مطابق لبنان میں برسوں سے نظربند ھانیبل قذافی نے چند روز قبل کھانا کھایا اور کہا کہ وہ اپنی رہائی تک بھوک ہڑتال جاری رکھیں گے۔

کرنل قذافی کے بیٹے نے یہ بھی کہا کہ ان کے ساتھ جو کچھ ہو رہا ہے یہ ناانصافی کی انتہا ہے اور اس سے لبنانی عدلیہ کی بدعنوانی کا پتہ چلتا ہے۔ لبنان کے حکمران میری رہائی کے بدلے میں لیبیا سے 2 بلین ڈالر کی رقم کا مطالبہ کرتے ہیں۔ جن لوگوں نے مجھے شام سے اغوا کیا تھا انھوں نے پہلے لمحے سے میری آزادی کے بدلے رقم کا مطالبہ کیا تھا۔

العربیہ ذرائع نے بھی ھانیبل قذافی کے حوالے سے انکشاف کیا کہ لبنان کی عدلیہ کی حالت قابل تضحیک ہوگئی ہے اور اسے ذاتی مفادات کے حصول کے لیے استعمال کیا جا رہا ہے۔

یاد رہے کرنل قذافی کے بیٹے کا معاملہ اس وقت لوگوں کی توجہ کا مرکز بن گیا جب جون میں کی تیسری تاریخ کو انہوں نے بھوک ہڑتال کرنے کا اعلان کردیا تھا اور اپنی رہائی کا مطالبہ کیا تھا۔ لبنانی عدلیہ نے انہیں 8 سال تک حراست میں رکھا ہوا ہے۔

بھوک ہڑتال کرنے کے ہفتوں بعد ھانیبل کی صحت بگڑ گئی۔ انہیں 1978 میں لیبیا کے دار الحکومت طرابلس میں شیعہ عالم موسی الصدر کے اغوا میں ملوث ہونے کی بنا پر گرفتار کیا گیا ہے۔ ھانیبل اس کیس کو ناانصافی قرار دیتے ہیں۔

ھانیبل نے کہ موسی الصدر کی گمشدگی کے متعلق تفتیش کے دوران بارہا کہا ہے کہ میرے پاس موسی الصدر کے متعلق کوئی اطلاع نہیں۔ موسی الصدر کی گمشدگی اس وقت ہوئی تھی جب میں بچہ تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں