برکینا فاسو کی سرحد کے قریب گوریلا کارروائی میں 17 نیجر فوجی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

نیجر کی ملٹری کونسل نے بدھ کے روز کہا ہے کہ 26 جولائی کی بغاوت کے بعد سب سے مہلک حملے میں بندوق برداروں کے حملے میں 17 فوجی مارے ہلاک ہو گئے۔

وزارت دفاع نے کہا کہ یہ حملہ منگل کو دارالحکومت نیامی سے تقریباً 60 کلومیٹر دور برکینا فاسو کی سرحد پر ملک کے جنوب مغربی علاقے میں ہوا، بیان میں حملے کو دہشت گردانہ کارراوئی قرار دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ اس کارروائی میں 100 حملہ آوروں نے حصہ لیا نہیں ہلاک کردیا گیا ہے۔

وزارت دفاع نے مزید کہا کہ "فوجیوں کے رد عمل کی رفتار اور جھڑپ کے مقام پر فضائی اور زمینی افواج کے ردعمل نے دشمن سے نمٹنا آسان بنا دیا۔"

دی اکنامک کمیونٹی آف ویسٹ افریقن سٹیٹس (ECOWAS) نے کہا کہ اسے مسلح گروپوں کی طرف سے کئی حملوں کی خبریں موصول ہوئی ہیں جن میں "چند" فوجی ہلاک ہوئے ہیں۔ ایکواس نے نیجر کے فوجی رہ نماؤں سے آئینی نظم بحال کرنے کا مطالبہ کیا تاکہ فوج سلامتی پر توجہ مرکوز کر سکے۔ گروپ نے کہا کہ بغاوت کے بعد سے کمزوری کی وجہ سے اس میں اضافہ ہوا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں