سوڈانی آرمی چیف کی نیویارک میں سعودی وزیر خارجہ سے ملاقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سوڈان کی مسلح افواج کے کمانڈر ان چیف اورخود مختار کونسل کے سربراہ لیفٹیننٹ جنرل عبدالفتاح البرھان نے سعودی عرب کے وزیر خارجہ شہزدہ فیصل بن فرحان بن عبداللہ سے نیویارک میں ملاقات کی۔

دونوں رہ نماؤں کے درمیان یہ ملاقات نیویارک شہر میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 78ویں اجلاس کے موقع پر ہوئی۔ ملاقات میں سوڈان کی عبوری خود مختاری کونسل کے چیئرمین لیفٹیننٹ جنرل عبدالفتاح البرہان نے سوڈان کی تازہ ترین صورت حال پر بریفنگ دی۔

ملاقات کے دوران سوڈان کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس موقعے پر سعودی وزیر خارجہ نےسوڈان میں انسانی ہمدردی کی سرگرمیاں جاری رکھنے، شہریوں اور امدادی کارکنوں کے تحفظ اور انسانی ہمدردی کی راہداریوں کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے تمام سوڈانی فریقوں کے تعاون کی ضرورت پر زور دیا۔

بن فرحان نے مملکت کی جانب سے پرسوڈان کے تنازع کے پرامن حل، تنازع کو بات چیت کے ذریعے حل کرنے اور متحارب فریقین کے درمیان بات چیت کا عمل بحال کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

خیال رہے کہ سوڈانی فوج کے کمانڈرعبدالفتاح البرہان اور ریپڈ سپورٹ فورسز[آر ایس ایف] کے کمانڈر محمد حمدان دقلو (حیمدتی) ایک دوسرے پر جنگ کو ہوا دینے کا الزام عاید کرتے ہیں۔ سوڈان میں گذشتہ اپریل سے جاری خانہ جنگی کے دوران اب تک 50 لاکھ سے زائد افراد بے گھر ہو چکے ہیں۔

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب میں البرہان نے ریپڈ سپورٹ فورسز کو "دہشت گرد تنظیم" قرار دینے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے ’آر ایس ایف‘ پر سوڈانی عوام کے خلاف جنگی جرائم کا ارتکاب کرنے کا الزام لگایا۔

دوسری جانب حمیدتی نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے اپنی ریکارڈ شدہ تقریر کے دوران کہا کہ ان کی افواج جنگ بندی اورتنازع کے سیاسی حل کی طرف جانے اور مذاکرات کے کے لیے پوری طرح تیار ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں