سعودی آرامکو ایل این جی کے حصول کے لیے مڈ اوشین انرجی کے حصص خریدکرے گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی بڑی تیل کمپنی آرامکو نے مائع قدرتی گیس کمپنی مڈ اوشین انرجی کے 50 کروڑ ڈالر مالیت کے تزویراتی اقلیتی حصص حاصل کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

مڈ اوشین امریکی سرمایہ کار فرم ای آئی جی پارٹنرز کی ملکیت اور اس کے زیرانتظام ہے۔اس نے 2021 میں آرامکو کے تیل پائپ لائنوں کے کاروبار میں 49 فی صد حصص خریدنے کے لیے کنسورشیم کی قیادت کی تھی۔ اس معاہدے سے آرامکو نے 12.4 ارب ڈالر جمع کیے تھے۔

آرامکو اپ اسٹریم کے صدر ناصر کے النعیمی نے ایک بیان میں کہا کہ ’’یہ آرامکو کی ایک نمایاں عالمی ایل این جی کمپنی بننے کی جانب حکمتِ عملی میں ایک اہم قدم ہے‘‘۔

انھوں نے کہا کہ مڈ اوشین انرجی ایل این جی کی بڑھتی ہوئی طلب سے فائدہ اٹھانے کی صلاحیت رکھتی ہے اور یہ تزویراتی شراکت داری عالمی سطح پر نئے مواقع کی نشان دہی کرنے اور ان سے فائدہ اٹھانے کے لیے معروف بین الاقوامی کھلاڑیوں کے ساتھ کام کرنے کی ہماری خواہش کی عکاسی کرتی ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ مڈ اوشین آسٹریلیا میں ایل این جی کے چار منصوبے خریدکرنے میں دل چسپی رکھتی ہے ۔یہ ایل این جی کے عالمی سطح پر کاروبار میں اس کی ترقی کی حکمت عملی کا حصہ ہے۔

اکتوبر 2022 میں مڈ اوشین نے کہا تھا کہ اس نے ٹوکیو گیس کمپنی کے ساتھ 2.15 ارب ڈالر میں جاپانی کمپنی کے حصص خریدنے پر اتفاق کیا تھا۔

ذرائع نے جولائی میں برطانوی خبررساں ایجنسی رائٹرز کو بتایا تھا کہ ای آئی جی بین الاقوامی سرمایہ کاروں، خاص طور پر مشرق اوسط میں، مڈ اوشین میں خریداری کے لیے کام کر رہی ہے اور آسٹریلیا سے تعلق رکھنے والی کمپنی کو 10.2 ارب ڈالر میں خریدکرنے والے کنسورشیم کا حصہ ہے۔

آرامکو کے صدر اور چیف ایگزیکٹو امین الناصر نے کہا کہ اس معاہدے سے آرامکو کے ای آئی جی کے ساتھ تعلقات مضبوط ہوئے ہیں اورگیس محفوظ، قابل رسائی اور زیادہ پائیدار توانائی کی دنیا کی بڑھتی ہوئی ضرورت کو پورا کرنے میں اہم ثابت ہوگی۔البتہ اس کے پاس یہ آپشن ہوگا کہ وہ اس میں اضافہ کرسکے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں