امریکی مالک مکان کے ہاتھوں چھ سالہ مسلمان بچہ قتل

نفرت پر مبنی اس خوفناک عمل کی امریکا میں کوئی جگہ نہیں ہے اور یہ ہماری بنیادی اقدار کے خلاف ہے: جو بائیڈن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

امریکہ میں پولیس نے ایک 71 سالہ شخص کو قتل اور نفرت پر مبنی جرم کے الزام میں گرفتار کیا ہے، جس نے ایک چھ سالہ فلسطین نژاد لڑکے اور اس کی ماں پر چاقو سے حملہ کیا، جس میں لڑکا ہلاک ہو گیا، جبکہ اس کی 32 سالہ ماں کو شدید زخم آئے ہیں۔

شکاگو کے مضافاتی علاقے میں ول کاؤنٹی شیرف کے دفتر نے اتوار کے روز ایک بیان میں کہا کہ ''تفتیشی اہلکار اس بات کا تعین کرنے میں کامیاب رہے کہ اس وحشیانہ حملے میں دونوں متاثرین کو مشتبہ شخص نے اس لیے نشانہ بنایا، کیونکہ وہ مسلمان تھے۔''

ول کاؤنٹی شیرف کے دفتر نے ایک بیان میں کہا کہ لڑکے پر سات انچ کے ایک فوجی طرز کے چاقو سے 26 بار حملہ کیا گیا۔ 32 سالہ خاتون کو بھی چاقو کے متعدد زخم آئے اور ان کی حالات تشویش ناک ہے، تاہم توقع ہے کہ وہ زندہ بچ جائیں گی۔

ول کاؤنٹی شیرف کے دفتر نے یہ بھی کہا کہ حماس اور اسرائیل کے درمیان موجودہ تنازعے کی وجہ سے متاثرین کو نشانہ بنایا گیا۔ اس بیان کے مطابق ہفتے کی صبح اسے خاتون کی طرف سے ایک ہنگامی کال موصول ہوئی، جس نے بتایا کہ اس کے مکان مالک نے اس پر حملہ کر دیا ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ خاتون نے بتایا کہ وہ ''باتھ روم میں بھاگیں اور اپنے حملہ آور سے لڑتی رہیں۔'' جب پولیس جائے وقوعہ پر پہنچی تب تک خاتون اور لڑکے کے سینے، دھڑ اور اوپری حصے پر متعدد حملوں سے کئی زخم لگ چکے تھے۔ دونوں متاثرین کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی ہے۔

شکاگو میں کونسل آف امریکن اسلامک ریلیشنز (سی اے آئی آر) کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر احمد ریحاب نے اپنی ویب سائٹ پر ایک بیان میں کہا، ''ہم غمزدہ ہیں، اور ہماری دعائیں پیارے لڑکے اور اس کی ماں کے ساتھ ہیں۔''

تنظیم نے متاثرین کی ایک فلسطینی نژاد امریکی لڑکے کے طور پر کی ہے، جو حال ہی میں چھ برس کا ہوا تھا، اور ان کی ماں کا نام حنان شاہین بتایا گیا ہے۔

کیئر [سی اے آئی آر] نے اپنے ایک بیان میں کہا، ''ہم مقامی حکام کی سرکاری تحقیقات کا انتظار کر رہے ہیں، اس وقت ہم جس چیز کی تصدیق کر سکتے ہیں وہ یہ ہے کہ ہمارے اپنے گھر میں ایک چھ سالہ بچہ ہے، جس نے ابھی چند ہفتے قبل اپنی سالگرہ منائی تھی اور ایک ماں ہسپتال میں شدید حالت میں پڑی ہیں، دونوں پر ایک درجن سے بھی زیادہ بار چاقو سے حملہ کیا گیا۔''

تنظیم کے مطابق یہ خاندان گذشتہ دو برس سے اس گھر کے گراؤنڈ فلور پر مقیم تھا اور اطلاعات کے مطابق مشتبہ شخص ان کا مکان مالک تھا۔

جو بائیڈن ردعمل

افسوسناک واقعہ پر رد عمل دیتے ہوئے امریکی صدر جو بائیڈن نے کہا ہے کہ وہ فلسطینی نژاد امریکی خاتون اور اس کے بچے پر ہونے والے حملے پر افسردہ ہیں، نفرت پر مبنی اس خوفناک عمل کی امریکا میں کوئی جگہ نہیں ہے اور یہ ہماری بنیادی اقدار کے خلاف ہے۔

اپنے بیان میں جو بائیڈن کا مزید کہنا تھا کہ امریکی ہونے کے ناطے ہمیں اکٹھا ہونا چاہیے اور اسلاموفوبیا سمیت ہر قسم کی نفرت کو مسترد کر دینا چاہیے۔

کونسل آف امریکن اسلامک ریلیشنز شکاگو چیپٹر کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر احمد ریحاب نے واقعہ کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکا میں کسی کے لئے نفرت کی کوئی جگہ نہیں ہے۔

احمد ریحاب کا کہنا تھا کہ امریکا میں یہود دشمنی اور اسلامو فوبیا کے لئے کوئی جگہ نہیں ہے، ہم اپنی مسلم امریکی کمیونٹیز سے کہتے ہیں کہ وہ سب سے پہلے حفاظت اور تحفظ کو یقینی بنائیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں