فلسطین اسرائیل تنازع

غزہ میں جنگ بندی ۔۔۔ روس سلامتی کونسل کا پھر اجلاس بلائے گا: روسی نائب مندوب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

روس نے غزہ پر جاری اسرائیلی بمباری سے پیدا شدہ صورت حال کے بارے میں غور کے لیے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا ایک اور اجلاس بلانے کا ارادہ ظاہر کیا ہے۔ یہ بات اقوام متحدہ کے لیے روس کے مستقل نائب مندوب نے ہفتے کے روز بتائی ہے۔

اس سے قبل روس کی طرف سے غزہ میں جنگ بندی کے لیے پیر کے روز بھی سلامتی کونسل کا ایک ہنگامی اجلاس بلایا جا چکا ہے۔ تاہم امریکہ اور چار دیگر کونسل ممبران کی مخالفت کی وجہ سے جنگ بندی کی روسی قرارداد ناکام ہو گئی۔

امریکہ کی طرف سے روسی قرارداد پر اعتراض کیا گیا تھا کہ اس میں حماس کا ذکر نہیں کیا گیا ہے۔ اب روسی نائب مندوب نے بتایا ہے کہ ہم سلامتی کونسل کا ایک نیا اجلاس بلانا چاہتے ہیں۔

روس کے مستقل نائب مندوب دمتی پولیانسکی کا کہنا تھا جیسا کہ پہلے بھی اس کی ہمت روس ہی نے کی تھی۔ تاہم روسی نائب مستقل مندوب نے یہ نہیں بتایا ہے کہ روس کی طرف سے یہ قرارداد کب تک آجائے گی اور سلامتی کونسل کا اجلاس کب طلب کیا جائے گا۔

ان کا البتہ یہ کہنا تھا کہ اس ممکنہ قرارداد کے بارے میں نہیں جانتا کہ ہم کس قدر تیزی کے ساتھ اس قرارداد کی منظوری کے مرحلے تک پہنچیں گے۔

روسی نائب مندوب ایک ٹی وی چینل کو انٹرویو دے رہے تھے۔ واضح رہے روس نے بار بار غزہ میں جنگی بندی اور مذاکرات کے ذریعے جھگڑے کے خاتمے پر زور دیا ہے۔

روس کے صدر ولادی میر پوتین پچھلے ہفتے کے دوران اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو اور ایرانی صدر ابراہم رئیسی سے بھی فون پر تبادلہ خیال کر چکے ہیں تاکہ جنگ بندی ہو اور معاملہ بات چیت سے حل کیا جائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں