فضائی کمپنی 'کیتھے' کی اسرائیل کے لیے پروازیں منسوخ، پروازیں 31 دسمبر تک بند کی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

معروف فضائی کمپنی 'کیتھے پیسفک ائیرویز' نے اسرائیل میں جنگی صورت حال کے پیش نظر ہانگ کانگ اور تل ابیب کے درمیان اپنی پروازوں کو منسوخ کر دیا ہے۔ پروازوں کی منسوخی کا یہ اعلان اسرائیل میں غیر یقینی حالات کی وجہ سے رواں سال کے اختتام تک رہے گا۔

یہ اعلان کیتھے پیسفک ائیر ویز نے باضابطہ طور کیا ہے۔ اس سلسلے میں جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے 'کیتھے کے جن مسافروں نے پہلے سے ان شہروں کے درمیان آنے جانے کے لیے 31 مارچ 2024 تک کے سفری ٹکٹ لے رکھے ہیں وہ نئی تاریخوں کے لیےاپنی بکنگ کی تجدید کرا سکتے ہیں۔

خیال رہے کیتھے نے اس سے قبل رواں ماہ کے آغاز میں بھی ایک بار پروازیں روک دی تھیں۔ پراوزوں میں یہ رکاوٹ حماس کے اسرائیل پر خوفناک حملوں کے بعد پیدا ہوئی تھی۔ خطے میں امن و امان کی بگڑی ہوئی صورت حال کے پیش نظر تل ابیب آنے والے مسافروں کی تعداد میں بھی غیر معمولی کمی ہو چکی ہے۔

سات اکتوبر سے مسلسل اسرائیلی فضائی کے طیارے غزہ پر بمباری کے لیے اڑ رہے ہیں اور اسرائیل پر حماس کے راکٹ حملوں کا بھی ہر وقت اندیشہ رہتا ہے

ائیر لائن نے شروع میں ہفتے میں تین پروازوں کا شیڈول دیا تھا۔ تاہم بعد ازاں پروازوں کی معطلی کا اعلان کر دیا ہے۔ بہت سے ملکوں نے اپنے شہریوں کو تل ابیب کی طرف سے سفر سے روک دیا ہے۔ اسرائیل نے بھی سفارتی تعلقات کے باوجود اپنے شہریوں کو کئی ملکوں کے سفر پر جانے سے منع کر دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں