اقوام متحدہ فلسطینیوں کی جبری نقل مکانی کے لیے اسرائیل سے ملا ہوا ہے: حماس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسلامی تحریک مزاحمت [حماس] نے اقوام متحدہ کے ذیلی ادارے ’انروا‘پر الزام لگایا ہے کہ وہ اسرائیل کے ساتھ مل کر غزہ کے لوگوں کو جبراً نقل مکانی کروا رہا ہے۔ حماس کا یہ موقف بدھ کے روز سامنے آیا ہے۔

حماس کے میڈیا بیورو کے سربراہ سلامہ معروف کی طرف سے کہا گیا ہے کہ ' انروا' اور اس کے حکام کو غزہ میں انسانی تباہی کی ذمہ داری قبول کرنی چاہیے۔ خصوصاً غزہ شہر اور اس کے شمالی حصے میں پیش آنے والے مصائب پر جو وہاں کے لوگوں کو برداشت کرنا پڑ رہے ہیں۔

خیال رہے غزہ پر حملہ آور اسرائیلی فوج نے فلسطینی عوام سے شمالی غزہ سے نکل کر جنوبی غزہ کی طرف نقل مکانی کرنے کا کہہ رکھا ہے۔
دوسری جانب 'انروا' کے ترجمان نے حماس کے اس الزام کے بارے میں فوری طور پر کوئی جواب نہیں دیا۔ اس سلسلے میں 'انروا' سے میڈیا نے رابطہ بھی کیا ہے تاہم ' انروا' اور اس کے ترجمان خاموش ہیں۔

واضح رہے اقوام متحدہ اس سے پہلے یہ اعلان کر چکا ہے کہ سات اکتوبر سے اب تک پندرہ لاکھ شہری نقل اپنے گھروں کو چھوڑ چکے ہیں یا نقل مکانی کر چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں