سعودی عرب اور اٹلی کے درمیان مشترکہ سرمایہ کاری پر تبادلہ خیال

سرمایہ کاری کے لیے دفاع، توانائی، معدنیات کے شعبے ترجیح میں شامل ہوں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اطالوی وزیر صنعت اڈولفو ارسو نے کہا ہے سعودی عرب کے ساتھ توانائی، دفاع ، خلاء سے متعلق منصوبوں کے علاوہ آٹو موٹوز اور ہائیڈروجن کے شعبوں میں مشترکہ سرمایہ کاری کے لیے مملکت کے ساتھ بات چیت کی جا رہی ہے۔

ان مشترکہ سرمایہ کاری کے منصوبوں سے متعلق بات کرتے ہوئے وزیر صنعت نے پیر کے روز بتایا 'اکتوبر 2022 میں وزیر اعظم جارجیا میلونی نے عہدہ سنبھالتے ہی خلیجی ملکوں کے ساتھ قریبی تعلقات اور معاہدوں کے لیے کوشش شروع کر دیں۔‘

آج منگل کے روز تک وزیر اعظم عرب ملکوں کا دورہ کریں گے۔ اس دورے کا مقصد قطر، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے ساتھ اعلیٰ کی سطح پر تبادلہ خیال ہے تاکہ دو طرفہ تعلقات اور معاہدات کو فروغ مل سکے۔

وزیر صنعت اٹلی نے سعودی دارالحکومت ریاض میں سعودی شاہی کمیشن برائے جبیل اور ینبع کے صدر خالد السلیم کے ساتھ ملاقات کی۔ بعد ازاں اپنے بیان میں کہا 'اٹلی اور سعودی عرب دونوں ریگولیٹری اور صنعتی فریم ورک تیار کرنے کے لیے پر عزم ہوں گے۔ تاکہ خام مال کے سلسلے میں سٹریٹجک خود مختاری کو بڑھاوا دیا جا سکے'۔

ریگولیٹری اور صنعتی فریم ورک تیار کرنے کا مطلب خام مال کے اہم شعبے میں سٹریٹجک خودمختاری کو تیز کرنا ہے۔ وزیر صنعت نے کہا 'ہم شراکت داری اور مشترکہ سرمایہ کاری کے لیے معدنیات کے میدان میں بھی امکانات کی تلاش میں ہیں۔ یہ امکانی سرمایہ کاری براعظم افریقہ میں بھی ہو گی۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں