’عراقی حکومت امریکی مفادات پرحملوں میں ملوث عناصر کے خلاف عملی کارروائی کرے‘

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراق میں متعین امریکی سفیر نے بغداد حکومت پر زور دیا ہے کہ وہ امریکی مفادات پر حملوں میں ملوث عناصر کےخلاف بیان بازی کے بجائے عملی کارروائی کرے۔

ان کا یہ بیان عراقی حکومت کی طرف سے سفارتی مشنوں کے تحفظ اور بغداد میں امریکی سفارت خانے کے کمپاؤنڈ پر کل جمعہ کو ہونے والے بڑے حملے میں ملوث افراد کا تعاقب کرنے کے اپنے عزم کے بعد سامنے آیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اب کارروائی کرنے اور نتائج حاصل کرنے کا وقت آگیا ہے۔ ان کا اشارہ بغداد کی جانب سے امریکی سفارت خانے پر حملے میں ملوث افراد کو گرفتار کرنے کےان کے وعدے پر عمل درآمد کی طرف تھا۔

قبل ازیں امریکی وزیر دفاع لائیڈ آسٹن نے عراق اور شام میں امریکی افواج کے خلاف زیادہ ترحملوں کے پیچھے عراق میں حزب اللہ بریگیڈ اور حرکت النجباء کے ملوث ہونے کا الزام عائد کیا تھا۔

ان کا کہنا ہے کہ ان کا ملک ایرانی حمایت یافتہ عراقی گروپوں کے حملوں کے خلاف اپنے دفاع کا حق محفوظ رکھتا ہے۔

جمعہ کی رات عراقی وزیر اعظم محمد شیاع السودانی کے ساتھ فون پر بات کرتے ہوئے آسٹن نے بغداد میں امریکی سفارت خانے اور عراق اور شام میں حالیہ ہفتوں میں امریکی افواج پر حملوں کی مذمت کی۔

انہوں نے زور دیا کہ امریکا خطے میں امریکیوں پر کسی بھی حملے کے خلاف اپنے دفاع کا حق محفوظ رکھتا ہے۔

"ہم جواب دینے کا حق محفوظ رکھتے ہیں"

لائیڈ آسٹن نے وضاحت کی کہ "ہم عراق میں کتائب حزب اللہ گروپوں اور حرکت النجباء کے خلاف فیصلہ کن جواب دینے کا حق محفوظ رکھتے ہیں تاکہ امریکی اور اتحادی افواج کے خلاف خطرات اور حملوں کا مقابلہ کیا جا سکے۔

ایرانی حمایت یافتہ عسکریت پسندوں کے حملے عراق کی خودمختاری اور استحکام کو نقصان پہنچاتے ہیں اور سلامتی کے لیے خطرہ ہیں۔

عراقی وزیر اعظم کے ساتھ فون پر بات کرتے ہوئےآسٹن نے اس بات پر زور دیا کہ امریکی افواج کے خلاف حملے بند ہونے چاہئیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں