غزہ میں نسل کشی کے مقدمے میں کولمبیا کی عالمی عدالت میں فریق بننے کی درخواست

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بین الاقوامی عدالتِ انصاف کے مطابق کولمبیا نے عدالت سے استدعا کی ہے کہ اسے جنوبی افریقہ کے اس مقدمے میں فریق بننے کرنے کی اجازت دی جائے جس میں اسرائیل پر غزہ کی پٹی میں نسل کشی کا الزام لگایا گیا ہے۔

اپنی درخواست میں کولمبیا نے عدالت سے مطالبہ کیا کہ وہ "فلسطینی عوام کے تحفظ اور وجود" کو یقینی بنائے۔

اقوامِ متحدہ کی اعلیٰ ترین عدالت آئی سی جے ریاستوں کو مداخلت کرنے اور اپنے خیالات دینے کی اجازت دے سکتی ہے۔ کئی ریاستوں نے کہا ہے کہ وہ بھی اس معاملے میں مداخلت کرنے کی کوشش کریں گی لیکن تاحال صرف کولمبیا اور نکاراگوا نے عوامی درخواست دائر کی ہے۔

گذشتہ ہفتے آئی سی جے کے ججز نے اسرائیل کو حکم دیا تھا کہ وہ غزہ میں فلسطینیوں تک بلا تاخیر بنیادی خوراک کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے تمام ضروری اور مؤثر کارروائی کرے۔

جنوری میں آئی سی جے جسے عالمی عدالت بھی کہا جاتا ہے، نے اسرائیل کو حکم دیا کہ وہ کسی بھی ایسی کارروائی سے باز رہے جو نسل کشی کنونشن کے تحت آ سکتی ہے اور اس بات کو یقینی بنائے کہ اس کی فوج غزہ میں فلسطینیوں کے خلاف نسل کشی کی کوئی کارروائی نہ کرے۔

اسرائیل نے فلسطینی شہریوں کو نشانہ بنانے کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس کا واحد مفاد حماس کو ختم کرنا ہے۔ اسرائیل کے وکلاء نے جنوبی افریقہ کے مقدمے کو نسل کشی کنونشن کا غلط استعمال قرار دیتے ہوئے مسترد کر دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں