.

باغیوں کے زیر انتظام علاقوں میں سردی سے نو شامی بچے جاں بحق

ایمنسٹی کا موسم سرما میں پناہ گزینوں کی مشکلات میں اضافے پر انتباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عرب ملکوں میں سخت سردی کی تازہ لہر، برف باری اور یخ بستہ ہواوں کے باعث شامی پناہ گزینوں کی مشکلات میں کئی گنا اضافہ ہو گیا ہے۔ سخت سردی کے باعث شام میں باغیوں کے زیر انتظام دمشق کے مضافاتی علاقوں حمص اور حلب میں جان لیوا سردی سے کم سے کم نو بچے جاں بحق ہو گئے ہیں۔ ان علاقوں میں سردی کی شدت میں اضافے کے ساتھ ساتھ ایندھن، خوراک اور ادویہ کی فراہمی بھی معطل ہو چکی ہے۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سردی کی شدت میں اضافے کے ساتھ ہی شامی اپوزیشن اتحاد کی جانب سے عالمی برادری اور امدادی اداروں سے پناہ گزینوں کی امداد بڑھانے کا مطالبہ کیا ہے۔ اپوزیشن کا کہنا ہے کہ اندرون اور بیرون ملک بالخصوص اردن اور لبنان میں پناہ لینے والے شامی شہریوں کوموسم کی شدت کے باعث سنگین مصائب اور آلام کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق شمالی شام کے علاقوں کے متاثرین تک عراق کی فضائی حدود سے امداد کی فراہمی بھی رک گئی ہے۔ دو روز قبل اقوام متحدہ نے شامی پناہ گزینوں کو فوری امداد کی فراہمی کےلیے عراق کی فضائی حدود استعمال شروع کیا تھا تاہم مسلسل برف باری اور طوفانی بارشوں کے باعث امدادی آپریشن میں معطل ہوچکا ہے۔

درایں اثناء شامی سماجی کارکنوں نے بشارالاسد کی حکومت پرالزام عائد کیا ہے کہ وہ ملک میں جاری انسانی بحران کے خاتمے کے بجائے بحران کو مزید بڑھا رہی ہے۔ جبکہ انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے یورپی یونین اور عالمی برادری کو شامی پناہ گزینوں کو تحفظ نہ دلانے پر کڑی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ عالمی ادارے نے خبردارکیا ہے کہ شام سے نقل مکانی کرکے دوسرے ملکوں بالخصوص اردن اور لبنان میں پناہ حاصل کرنے والے لاکھوں افراد سسک سسک کرزندگی بسر کر رہے ہیں۔ سردی کی شدت نے ان کی مشکلات میں کئی گنا اضافہ کردیا ہے۔ عالمی برادری نے بروقت امداد فراہم نہ کی تو پناہ گزین کیمپوں میں انسانی المیہ رونما ہوسکتا ہے۔

انسانی حقوق کے کارکنوں کا کہنا ہے کہ پچھلے چند روز سے ملک میں جاری سردی کی سخت لہر کے باعث باغیوں کے زیرکنٹرول علاقوں میں کم سے کم نو بچے جاں بحق ہوگئے ہیں۔ ان میں چار نومولود شامل ہیں جو حلب کے نواحی علاقے جرابلس کے ایک کیمپ میں پیدائش کے بعد مناسب نگہداشت میسرنہ ہونے کے باعث انتقال کرگئے۔ حمص میں مسلسل برف باری اور ٹھنڈی ہواؤں کے باعث سردی سے ٹھٹھر کرتین بچوں کے جاں بحق ہونے کی اطلاعات ہیں۔