مصری فیلڈ مارشل کے حامی فٹبالر کو سزا کا سامنا

ہاتھوں کی انگلیوں سے '' سی سی '' کا علامتی اظہار کیا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصری فٹبالر کو متوقع صدارتی امیدوار اور مصری فوج کے سربراہ فیلڈ مارشل عبدالفتاح السیسی کے حق میں سیاسی جذبات ظاہر کرنے پر سزا کا سامنا کرنا پڑ گیا ہے۔ صالح امین نے حالیہ لیگ میچوں کے دوران گراونڈ میں فیلڈ مارشل السیسی کیلیے اپنے ہاتھوں کی انگلیوں اور انگوٹھوں کی مدد سے ''سی سی '' کی علامت بنائی تھی.

صالح امین فوج کی طرف سے فٹ بال کھیلتا ہے اور اسے السیسی کی اسطرح حمایت کرنے پر سیاسی بیانات دینے کیخلاف بنائے گئے قواعد کی خلاف ورزی کا ذمہ دار قرار دیا گیا ہے۔ واضح رہے مصر میں کھلاڑیوں کے سیاسی بیان دینے پر پابندی عاید ہے۔

مصری عوام میں السیسی کے حامی عام طور پر ہاتھوں کے اشاروں سے'' سی سی '' کی علامت بناتے ہیں۔ یہ روایت معزول کیے گئے صدر مرسی کے حامیوں کی طرف سے رابعہ کا نشان بنا کر اسے دنیا بھر میں ایک سیاسی علامت کے طور پر تسلیم کرائے جانے کے بعد شروع ہوئی ہے۔ تاہم چار انگلیوں کا کھلا اظہار اب عملا جرم بن چکا ہے۔

مصری فٹبال ایسوسی ایشن کی انضباطی کمیٹی نے صالح امین کو بقیہ سیزن کیلیے معطل کرتے ہوئے 2900 امریکی ڈالر کا جرمانہ کیا ہے۔ تاہم 31 سالہ صالح امین نے سیاسی معاملات میں حصہ لینے کے الزام کی تردید کی ہے۔ صالح کے سابق کوچ نے بھی یہی موقف اختیار کیا ہے کہ کھلاڑی کا سیاست سے کچھ لینا دینا نہیں ہے۔

اس سے پہلے 2013 میں متعدد اتھلیٹس کو مرسی کے حامیوں والا چار انگلیوں کا نشان بنانے پر سزا سنائی جا چکی ہے۔ ان پر بھی الزام تھا کہ ان کھلاڑیوں نے سرعام رابعہ کا نشان بنایا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں