اپوزیشن اتحاد کے سربراہ احمد الجربا اللاذقيه پہنچ گئے

بشار رجیم کیخلاف لڑنے والے انقلابیوں سے مشاورت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شامی اپوزیشن اتحاد کے سربراہ احمد الجربا نے ساحلی صوبہ اللاذقيه کا دورہ کر کے حیران کر دیا ہے۔ ایک روز قبل شام کے سرکاری میڈیا کے ذریعے یہ انکشاف کیا گیا تھا کہ سرکاری افواج نے صوبہ اللاذقيه کے اہم علاقے کا کنٹرول اپنے ہاتھ میں لے لیا ہے۔ ان اطلاعات کے فوری بعد اپوزیشن اتحاد کے سربراہ کا اس علاقے کا دورہ اہم بات ہے۔

احمد الجربا نے جبل ترکمان اور جبل اکراد کے علاقوں کا دورہ کیا ہے ، یہ دونوں علاقے پچھلے کئِ ماہ سے اپوزیشن کے کنٹرول میں ہیں۔ یہ بات احمد الجربا کے دفتر کی طرف سے جاری کردہ خبر میں بتائی گئی ہے۔ تاہم بقیہ صوبہ اللاذقيه پر شامی رجیم کے کنٹرول کا دعوی ہے۔ احمد الجربا کو ان علاقوں کا دورہ کرتے ہوئے ویڈیو فوٹیج میں دکھایا گیا ہے، تاہم اس فوٹیج میں وہ اس دوران بات چیت نہیں کر رہے ہیں۔

البتہ ایک باغی کمانڈر ملک الکردی نے اس موقع پر کہا '' ہم اس اجلاس میں یہ امید رکھتے ہیں کہ بشار رجیم کے خلاف جدوجہد کے اس آخری مرحلے کے آغاز کے تاریخی لمحات میں ہیں۔'' جربا کے دفتر کے مطابق اپوزیشن رہنما کا دورہ عوام اور باغیوں کے لیے ترتیب دیا گیا تھا۔

اجلاس کے دوران احمد الجربا نے گفتگو کرتے ہوئے کہا ''ہمیں الاذقيه میں بشار رجیم کے خلاف بر سر پیکار اپوزیشن کے دستوں کیلیے حقیقی حمایت اور امداد کی ضرورت ہے۔'' اپوزیشن اتحاد کے حوالے سے احمد الجربا نے کہا '' ہم نے انقلابیوں کو خط اول تک امداد فراہم کی ہے۔''

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں