.

''پانچ سو انتیس شہریوں کی سزائے موت پر تشویش ہے''

بان کی مون نے مصری وزیر خارجہ کو تشویش سے آگاہ کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بان کی مون نے مصر میں پانچ سو انتیس سیاسی کارکنوں کو سنائی جانے والی سزائے موت اور اخبار نویسوں کی گرفتاریوں پر سخت تشویش کا اظہار کیا ہے۔ سیکرٹری جنرل نے یہ تشویش مصر کے عبوری وزیرخارجہ نبیل فہمی سے برسلز میں ہونے والی ملاقات میں ظاہر کی ہے۔

نبیل فہمی یورپی اور افریقی ممالک کی مشترکہ کانفرنس کے لیے برسلز میں ہیں۔ جہاں ان کی بان کی مون سے سائیڈ لائنز میں ملاقات ہوئی ہے۔ بان کی مون نے اس موقع پر پچھلے ماہ ایک مصری عدالت سے صرف دو سماعتوں کے بعد سینکڑوں افراد کو سنائی گئی سزائے موت پر اپنے جذبات سے آگاہ کیا اور مصر میں میڈیا سے وابستہ افراد کی حراستوں پر بھی سخت تشویش ظاہر کی۔

سیکرٹری جنرل کے دفتر کی طرف سے اس بارے میں ایک بیان بھی جاری کیا گیا ہے۔ واضح رہے ماہ فروری میں مصری سکیورٹی حکام نے قطر سے تعلق رکھنے والے ایک ٹی وی چینل سے وابستہ صحافیوں کے خلاف ٹرائل شروع کرایا ہے۔ ان میں سے ایک صحافی کا آسٹریلیا سے، ایک کا کینیڈا سے اور ایک مصر سے ہی تعلق ہے ۔ ان پر الزام ہے کہ یہ تینوں اخوان کی حمایت کرتے ہیں۔ ان تینوں صحافیوں کو قاہرہ کے ایک ہوٹل سے کچھ عرصہ قبل گرفتار کیا گیا تھا۔

واضح رہے اقوام متحدہ اس سے پہلے بھی 529 افراد کی سزائے موت کی مذمت کر چکا ہے ، جبکہ امریکا، برطانیہ کے علاوہ انسانی حقوق سے تعلق رکھنے والی عالمی تنظیموں نے بھی سخت افسوس کا اظہار کیا تھا۔