.

ایران یورپی ممالک کو گیس فراہمی کیلیے کوشاں

روس کے مقابل نہیں آنا چاہتے، صرف اپنا حصہ چاہتے ہیں: ایران

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران یورپی ممالک میں اپنی گیس کیلیے امکانات کو روشن دیکھتے ہوئے اور ان ممالک میں آئندہ دنوں گیس کی ضروریات میں اضافے کے پیش نظر مغربی ممالک کو گیس فراہم کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔ یہ بات ایرانی وزیر صنعت محمد رضا نعمت زادے نے پیر کے روزایک انٹرویو میں کہی ہے۔

ایرانی وزیر نے کہا '' ہم روس کے مقابل نہیںں آنا چاہتے، لیکن ہم جانتے ہیں کہ یورپی ملکوں کی گیس کی ضروریات بڑھ رہی ہیں، اس لیے اس میں ہم بھی اپنا حصہ لینا چاہتے ہیں۔'' رضا نعمت زادے نے کہا '' ہمارے پاس محفوظ وسائل اور دوسرے ممالک سے تعاون کیلیے منصوبے ہیں، اس لیے جہاں تک روسی تشویش کا معاملہ ہے ہم یہ واضح کرنا چاہتے ہیں کہ ہمارا یہ صرف یورپ کے بارے میں فیصلہ ہے۔''

واضح رہے یورپی ملکوں کی یوکرین کے ایشو پر روس سے ناراضگی کے ماحول میں یہ ایرانی خواہش سامنے آنا اہم ہے۔ امریکا اور یورپی ممالک ماہ مارچ میں کریمیا کے حوالے سے روسی فوجی مداخلت اور کریمیا پر قبضے پر اپنا غم و غصہ ظاہر کر چکے ہیں۔

اس صورت حال پر تجزیہ کاروں بشمول تھامس ایل فرائڈ مین نے گیس کے استعمال کے حوالے سے کہا ہے کہ یورپ کو روس پر انحصار کم کرنا چاہیے ۔ روس گیس کے وسائل سے مالا مال ملک ہونے کے ساتھ ساتھ یورپ کو گیس برآمد کرنے والا سب سے بڑا ملک ہے۔

جوہری تنازعے پر ایران اور چھ بڑی طاقتوں کے درمیان شروع ہونے والے مذاکرات سے ایران اور مغرب کے درمیان فاصلے کم ہو رہے ہیں۔ حتی کہ امریکا کی طرف سے اقوام متحدہ میں نئے ایرانی سفیر کو ویزا سے انکار کے باوجود جوہری مذاکرات پر کوئی اثر نہیں مرتب ہوا ہے۔ اس سلسلے میں ماہ جولائی میں حتمی معاہدے کی توقع ہے۔