.

نوری المالکی فوج کی تکریت میں دیہات پر گولا باری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق میں مرکزی حکومت کے خلاف بغاوت پر آمادہ شہروں اور سیاسی جماعتوں کے نوری المالکی کے خلاف معرکہ میں تیزی آتی جا رہی ہے جبکہ ایسی ہی صورتحال بغداد اور نیم خود مختار علاقے کردستان کے درمیان تعلقات میں دیکھی جا سکتی ہے۔

عراق کی اہم گورنری صلاح الدین کے شمالی شہر تکریت میں سبایکر فوجی اڈے کے قریبی گاٶں الاعیوج پر نوری المالکی کے توپخانے کی گولا باری سے دسیوں نہتے شہری لقمہ اجل بنے ہیں۔ مسلح جنگجوٶں نے نوری المالکی فوج کے ایک قافلے پر حملہ کیا ہے جو بظاہر سبایکر فوجی اڈے کے لئے مزید کمک لے کر جا رہا تھا۔

مسلح جنگجوٶں نے بلد ائر فورس بیس کا کنٹرول حاصل کرنے کے لئے حملہ کیا ہے۔ اسی بیس نوری المالکی کے لڑاکا جہاز اڑان بھرتے ہیں جو پھر نینوی اور صلاح الدین کے شمالی شہروں پر بمباری کرتے ہیں'

سامراء شہر کے قریبی دیہات کے رہائشیوں نے بتایا کہ مسلح افراد انہیں علاقہ چھوڑنے کی دھمکیاں دے رہے ہیں۔ بادی النظر میں ان دھمکیوں کا مقصد مسلح افراد کا سامرا شہر حملے کی تیاری معلوم ہوتا ہے کیونکہ علاقے سے بڑے پیمانے پر شہریوں نے انخلاء شروع کر رکھا ہے۔

ادھر شمال مشرق بغداد کی گورنری دیالی میں صورتحال مزید شدت اختتار کرتی جا رہی ہے کیونکہ انقلابی قبائل نے منصوریہ الجبل میونسپلٹی کے قریب 20 بریگیڈ پر حملہ کیا جس کے ساتھ ہی منصوریہ الجبل، الصدور اور الھارونیہ پر شدید حملوں کا سلسلہ شروع ہو گیا۔

تاہم کرد علاقے جلولا میں کرد سیکیورٹی فورس البیشمرکہ اور مسلح جنگجوٶں کے درمیان لڑائی جاری ہے جس میں اول الذکر نے شہر کے بعض علاقوں کا کںڑول حاصل کرنے میں کامیابی حاصل کر لی۔

نوری المالکی فوج کا کہنا ہے نہ انہوں نے الانبار گورنری کے شہر حدیثہ پر مسلح افراد کا بڑا حملہ ناکام بنا دیا ہے۔ مسلح جنگجو الانبار کا کنڑول حاصل کرنے کے لیے شہر پر مسلسل حملے کر رہے ہیں۔ شہر کے قریب واقع البغدادی بیس کا کںڑول جنگجوٶں کے پاس ہے اس کے باوجود حدیثہ شہر کا اہم ڈیم نوری المالکی کے ہاتھ میں ہے۔

اسی تنازع کے دوران دارلحکومت بغداد کی محاصرہ زدہ متعدد کالونیوں میں خونریز واقعات ہوتے دیکھے جا رہے ہیں۔ مسلح افراد نے مشرقی بغداد کی زبونہ کالونی میں دو عمارتوں پر حملہ کر کے بیس سے زائد خواتین کو ہلاک اور دو افراد کو زخمی کر دیا ہے، جبکہ بغداد کی کالونیوں میں مسلح ملیشیا کھلے عام گشت کرتی دیکھی جا سکتی ہیں۔