.

دمشق میں شیعہ جنگجوؤں کے‘‘لبیک یا خامنہ ای’’ کے نعرے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی خبر رساں اداروں نے ایک تازہ ویڈیو نشر کی ہے جس میں شمالی شام کے جنگ زدہ علاقے حلب میں جمع ایرانی، افغان، پاکستانی اور لبنانی حزب اللہ کے جنگجوؤں کو ’’لبیک یا خامنہ ای’’ کے نعرے لگاتے سنا جا سکتا ہے۔ایرانی پاسداران انقلاب کے پرچم تلے شام میں لڑنے والے یہ جنگجو حلب کے نواحی علاقے ‘‘الزھراء’’ میں جمع ہیں اور اپنی فتح کا جشن منا رہے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق فوٹیج میں شیعہ ملیشیا کے شدت پسندوں کو قصبے کو فتح کرنے کا جشن مناتے دیکھا جا سکتا ہے۔ انہوں نے ہاتھوں میں ایرانی لیڈروں بالخصوص آیت اللہ علی خامنہ ای، ایرانی انقلاب کے بانی آیت اللہ خمینی اور لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے سربراہ حسن نصراللہ کی تصاویر بھی اٹھا رکھی ہیں اور ساتھ ہی وہ ایران زندہ باد کے نعرے بھی لگا رہے ہیں۔ شیعہ ملیشیا کی جان سے حلب میں یہ جشن ایک ایسے وقت میں منایا گیا ہے شامی اور روسی فوج کی وحشیانہ بمباری اور شیعہ اجرتی قاتلوں کی جارحیت کے نتیجے میں ہزاروں شہری نقل مکانی پر مجبور ہو چکے ہیں۔

خیال رہے کہ ایرانی ذرائع ابلاغ کے مطابق پچھلے ایک ہفتے میں شام میں صدر بشارالاسد کے دفاع میں لڑتے ہوئے 40 ایرانی فوج اور غیرسرکاری جنگجو ہلاک ہو چکے ہیں۔ مقتولین میں پاسداران انقلاب کے دو سینیر افسر قاسم بور اور اسماعیل شجاعی کے نام بھی شامل ہیں۔ انہیں شامی باغیوں نے حلب کے نبل اور الزھراء کے علاقے میں لڑائی میں ہلاک کیا۔