سعد حریری نے لبنانی صدارت کے لیے میشال عون کی حمایت کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

لبنان کے سابق وزیر اعظم سعد حریری نے صدر کے عہدے کے لیے میشال عون کی حمایت کردی ہے۔

سعد حریری نے جمعرات کو صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ''لبنان کو ایک سیاسی حل تک پہنچنے کی ضرورت ہے،اس لیے میں باضابطہ طور پر ملک کے صدر کے عہدے کے لیے میشال عون کی توثیق کررہا ہوں''۔

میشال عون لبنان میں مسیحیوں کی سب سے بڑی جماعت آزاد محب الوطن تحریک ( فری پیٹریاٹک موومنٹ) کے بانی ہیں۔واضح رہے کہ لبنان میں مئی 2014ء سے کوئی صدر نہیں ہے اور پارلیمان متعدد اجلاسوں کے باوجود نئے صدر کے انتخاب میں ناکام رہی ہے۔لبنان عرب دنیا کا سب سے بدعنوان ترین ملک قرار پایا ہے۔

سعد حریری نے پڑوسی ملک شام کی صورت حال کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ وہ اس وجہ سے بھی میشال عون کی توثیق کررہے ہیں۔انھوں نے تمام لبنانی شہریوں پر زوردیا ہے کہ وہ ایک امیدوار کی حمایت کریں۔

انھوں نے کہا کہ ''لبنان اپنے ایک مشکل دور سے گزر رہا ہے۔خاص طور پر شام میں جاری تنازعے کی وجہ سے لبنان بری طرح متاثر ہوا ہے۔اس لیے عون کی حمایت کا وقت آگیا ہے۔اگرچہ اس اعلان کو بعض لوگ تنقید کا نشانہ بنائیں گے''۔

لبنان کی شمالی اور مشرقی سرحد شام سے ملتی ہے جہاں گذشتہ ساڑھے پانچ سال سے خانہ جنگی جاری ہے اور اس کے لبنان پر بھی اثرات مرتب ہورہے ہیں۔ہزاروں شامی شہری اپنا گھر بار چھوڑ کر اس چھوٹے سے ملک ہیں پناہ لیے ہوئے ہیں جبکہ مختلف باغی دھڑوں سے تعلق رکھنے والے جنگجو بھی لبنان کا رُخ کرتے رہتے ہیں۔سعد حریری کی مخالف سیاسی اور عسکری جماعت حزب اللہ شامی صدر بشارالاسد کی ہر طرح سے حمایت کررہی ہے۔اس کے جنگجو شامی فوج کے ساتھ مل کر باغی گروپوں کے خلاف لڑرہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں