شام میں جنگ بندی،آستانا میں سوموارکو سہ فریقی مذاکرات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

قزاقستان کی حکومت نے ایک بیان میں کہا ہے کہ شام میں جنگ بندی معاہدے کے عملی نفاذ کے طریقہ کار پر بات چیت کے لیے روس، ایران اور ترکی کے مندوبین 6 فروری بہ روز سوموار دارالحکومت آستانا میں ہونے والے مذاکرات میں شرکت کریں گے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق قازق وزارت خارجہ کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیاہے کہ روس، ایران اور ترکی عالمی برادری کو شام میں سیاسی عمل کی حمایت پر زور دے رہے ہیں۔ روس اور ترکی کی جانب سے شام میں قیام امن کے حوالے سے منظور کی گئی قرارداد 2254 پر عمل درآمد پر بھی زور دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ آستانا میں روس، ایران اور ترکی کی نگرانی میں شامی اپوزیشن اور حکومت کے درمیان 25 جنوری کو بالواسطہ مذاکرات ہوئے تھے۔ ان مذاکرات میں ایران، روس اور ترکی نے شام میں جنگ بندی کے قیام سے اتفاق کیا تھا تاہم اس کے تفصیلی طریقہ کار کے لیے بات چیت کو موخر کردیا گیا تھا۔

شام کے حوالے سے قزاقستان کے دارالحکومت آستانا میں ہونے والے مذاکرات کو ترکی، ایران اور روس کی مکمل حمایت حاصل ہے اور تینوں ملکوں کی مشترکہ کوششوں سے شامی حکومت اوراپوزیشن کے درمیان بالواسطہ بات چیت کی گئی ہے۔ آستانا مذاکرات کے بعد جنیوا میں 8 فروری کو شام سے متعلق اجلاس بلانے کا اعلان کیا گیا تھا مگر بعد ازاں جنیوا اجلاس رواں ماہ کے آخر تک ملتوی کردیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں