.

اردن : تین امریکی ٹرینروں کے قاتل فوجی کو سزائے عمر قید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اردن کی ایک فوجی عدالت نے ایک ائیربیس کے داخلی دروازے پر تین امریکی ٹرینروں کو ہلاک کرنے کے جرم میں ملوث فوجی کو عمر قید بامشقت کی سزا سنائی ہے۔

اردن کے عدالتی ذرائع کے مطابق اس فوجی پر قتلِ عمد کے الزام میں فرد جرم عاید کی گئی تھی جبکہ اس نے یہ موقف اختیار کیا تھا کہ وہ اس واقعے میں قصور وار نہیں ہے۔

امریکی ٹرینروں کے قتل کا یہ واقعہ گذشتہ سال نومبر میں عمان کے نزدیک واقع ایک فوجی اڈے پر پیش آیا تھا اور اس کے بعد امریکا اور اردن کے درمیان کشیدگی پیدا ہوگئی تھی۔

اردنی حکام نے پہلے یہ موقف اختیار کیا تھا کہ ٹرینروں نے فوجی مستقر کے گیٹ پر اپنی گاڑی کو نہیں روکا تھا جس کی وجہ سے فوجی نے ان پر فائرنگ کردی تھی مگر امریکا نے اس موقف کو مسترد کردیا تھا اور یہ کہا تھا کہ اس واقعے میں سیاسی محرک کو نظرانداز نہیں کیا جاسکتا۔

اردن امریکا کا خطے میں ایک اہم اور مضبوط اتحادی ملک ہے اور فوجی تعاون کے پروگرام کے تحت سیکڑوں امریکی کنٹریکٹرز وہاں تعینات ہیں۔اس کے علاوہ ایف سولہ لڑاکا جیٹ بھی اردن میں موجود ہیں اور وہ اس کے ہوائی اڈوں سے اڑ کر پڑوسی ملک شام میں داعش کے ٹھکانوں پر بمباری کررہے ہیں۔