.

روس کی حمیمیم میں طیارے تباہ ہونے کی تردید ، 2 فوجیوں کی ہلاکت کا اقرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روسی وزارت دفاع نے جمعرات کے روز ایک اعلان میں بتایا ہے کہ سالِ نو کی رات شام میں حمیمیم کے فضائی اڈّے پر ہونے والے حملے میں دو فوجی اہل کار ہلاک ہو گئے۔ تاہم وزارت نے میڈیا کی اُن رپورٹوں کو مسترد کر دیا جن میں 7 فوجی طیاروں کے تباہ ہونے کا بتایا گیا تھا۔

وزارت دفاع کے بیان کے مطابق 31 دسمبر کو غروبِ آفتاب کے بعد اندھیرا چھاتے ہی مسلح گروپ کی جانب سے حمیمیم کے اڈے کو اچانک مارٹر گولوں سے نشانہ بنایا۔ اس کے نتیجے میں اڈے پر موجود روسی اہل کاروں میں سے دو افراد اپنی جان گنوا بیٹھے۔ البتہ وزارت نے کومرسینٹ نامی اخبار کی اس معلومات کو جھوٹ قرار دیا جس میں دو عسکری اور سفارتی ذرائع کے حوالے سے بتایا تھا کہ حملے میں عملی طور پر 7 فوجی طیارے تباہ ہو گئے۔

روسی روزنامے کومرسینٹ نے مذکورہ ذریعوں کے حوالے سے بدھ کی شام بتایا کہ 31 دسمبر 2017 کو شامی اپوزیشن گروپوں کی جانب سے حمیمیم کے فضائی اڈّے پر داغے گئے راکٹوں کے نتیجے میں کم از کم 7 روسی طیارے تباہ ہو گئے۔

رپورٹ کے مطابق یہ 2015 میں روس کی جانب سے شام میں فضائی حملوں کی مہم کے آغاز کے بعد سے عسکری ساز و سامان کی مد میں اٹھایا جانے والا سب سے بڑا روسی نقصان ہے۔ حملے میں دس سے زیادہ عسکری اہل کار بھی زخمی ہوئے۔

مذکورہ اخبار کی ویب سائٹ نے دو سفارتی عسکری ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ بم باری میں کم از کم چار سوخوی-24 طیارے ، دو سوخوی-35 ایس طیارے اور ایک اینٹونوف-72 طیارہ تباہ ہوا۔ اس کے علاوہ گولہ بارود کا ایک ڈپو بھی حملے کی لپیٹ میں آیا