سلامتی کونسل کی سعودی عرب پرحوثیوں کے بیلسٹک میزائل حملوں کی مذمت

حوثیوں کے میزائل حملے خطے کی سلامتی کے لیے خطرہ قرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سلامتی کونسل نے یمن کے ایران نواز حوثی شدت پسندوں کی طرف سے سعودی عرب پر بیلسٹک میزائل حملوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ حوثیوں کے بیلسٹک میزائل حملے خطے کی سلامتی کے لیے خطرہ ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق بدھ کے روز سلامتی کونسل کے اجلاس میں سعودی عرب پر حوثی شدت پسندوں کے حملوں پر خصوصی بحث کی گئی۔

مقررین نے سلامتی کونسل کے اجلاس سے خطاب میں یمنی باغیوں کو اسلحہ کی ترسیل روکنے سے متعلق اقوام متحدہ کی قرارداد 2216 پر مکمل طورپر عمل درآمد پر زوردیا۔

خیال رہے کہ جون 2015ء کے بعد یمن کے حوثی باغی سعودی عرب پر 104 بیلسٹک میزائل حملے کرچکے ہیں۔ حوثیوں نے چھ جون 2015ء کو سعودی عرب پر پہلا اسکڈ میزائل داغا تھا جسےسعودی ڈیفنس فورس نے فضا میں تباہ کردیا تھا۔ اس سلسلے کا آخری واقعہ تین روز قبل اس وقت پیش آیا جب حوثیوں نے سعودی عرب کے شہروں پر 7 بیلسٹک میزائل داغے تاہم سعودی عرب کے پیٹریاٹ دفاعی نظام نے حوثیوں کے داغے میزائل فضاء ہی میں تباہ کردیے تھے۔

سعودی عرب پر حوثیوں کے حالیہ بیلسٹک میزائلوں کی عالمی سطح پرشدید مذمت کی گئی۔ اس ضمن میں کل بدھ کو سلامتی کونسل کا اہم اجلاس ہوا جس میں سعودی عرب پر ایران نواز حوثیوں کے حملوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں