’ابھاء‘ میں بارش کے موسم نے عشاق کو دیوانہ بنا دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب کے جنوب مغربی اور وسطی علاقوں میں گذشتہ دو روز کے دوران مینہ خوب جم کر برسا کہ جل اور تھل سب ایک ہو گئے۔ ویسے تو موسلا دھار بارش، تیز ہواؤں اور ژالہ باری نے الریاض، مشرقی گورنری، القصیم اور شمالی علاقوں میں موسم کو خوش بنا دیا مگر عسیر گورنری کے ابھا شہر میں ہونے والی بارش اور ژالہ باری نے مناظر قدرت کے قدرتی حسن کے اسیر عاشق مزاج شاعروں کو موسم نے دیوانہ بنا دیا۔

لوگ دور دور سے ابھا اور اس کی وادیوں میں ہونے والی بارش سے لطف اندوز ہونے آئے۔ اس موقع پرعربی شاعر احمد الصالح بھی بے طرح یاد آئے جنہوں نے ابھاء کی سرسبزو شاداب وادیوں، اس کے موسموں اور دلفریب قدرتی نظاروں کو اپنی شاعری میں جگہ دیتے ہوئے اسے حسن کائنات کا منفرد مقام قرار دیا۔

مقامی فوٹو جرنلسٹ محمد عسیری جو ابھاء میں موجود تھے نے موقع پاتے ہی شہر میں ہونے والی ژالہ باری اور بارش کو اپنے کیمرے کی آنکھ میں محفوظ کر لیا۔

احںد عسیری کا کہنا ہے کہ خوش گوار اور دلفریب موسم سے لطف اندوز ہونے کے لیے ہرشخص گھر سے نکل پڑا۔ ابھا حقیقی معنوں میں ایک شاہکار اور دست قدرت سے تیار کردہ فن پارہ لگ رہا تھا۔

احمد عسیری کا کہنا ہے کہ بہار کے موسم میں ابھاء میں بارشیں معمول کا حصہ ہیں اور یہاں کے دلفریب موسم اور قدرتی حسن وجمال سے شاعر ہمیشہ متاثر رہے اورانہوں نے اپنے منظوم کلام میں بھی ابھاء کے اس قدرتی حسن کے تذکرے کررکھے ہیں۔

سعودی عرب کے محکمہ موسمیات کی طرف سے جاری کردہ رپورٹ میں دو روز کے لیے بارشوں کی پیش گوئی کی گئی تھی۔ بارش کے ساتھ ساتھ شمال مغرب کی طرف سے آنے والی ٹھنڈی ہوائوں نے موسم مزید ٹھنڈا کردیا اور درجہ حرارت میں نمایاں کمی آئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں