حوثی الحدیدہ کا کنٹرول اقوام متحدہ کی نگرانی میں دینے پر تیار ہیں: مارٹن گریفتھ

یمن کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی مندوب کی صدر عبد ربہ منصور ھادی سے ملاقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

یمن کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی مارٹن گریفتھ نے صدر عبد ربہ منصور ہادی کو بتایا ہے کہ ایران نواز حوثی باغیوں نے ساحلی شہر الحدیدہ اور بندرگاہ کو اقوام متحدہ کی نگرانی میں دینے کی تجویز قبول کرلی ہے۔

قبل ازیں صدر ھادی نے اقوام متحدہ کے مندوب سے کہا تھا کہ وہ الحدیدہ میں حوثیوں باغیوں کا وجود قبول نہیں کریں گے۔ حوثی یا تو الحدیدہ شہر اور بندرگاہ سے نکل جائیں یا جنگ کے لیے تیار رہیں۔

ادھر یمن کی سرکاری فوج اور سعودی عرب کی قیادت میں عرب اتحادی فو نے الحدیدہ شہر پر مزید حملے کیے ہیں۔ ان حملوں میں باغیوں کو غیر معمولی جانی نقصان سے دوچار کیا گیا ہے۔

یو این مندوب مارٹن گریفتھ نے بدھ کو صدر عبد ربہ منصور ھادی سے ملاقات کی تھی۔ ملاقات میں الحدیدہ میں فوجی کارروائی کے بجائے بات چیت کے ذریعے مسئلے کے حل پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس موقع پر اقوام متحدہ کے ایلچی نے بتایا کہ حوثی باغیوں نے الحدیدہ شہر اور بندرگاہ کو اقوام متحدہ کی نگرانی میں دینے کی تجویز قبول کرلی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں