ایران کو شام سے نکالیں، بشارالاسد کے لیے خطرہ نہیں بنیں گے: اسرائیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اسرائیلی حکومت کے ایک ذمہ دار ذرائع کا کہنا ہے کہ اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاھو نے اپنے دورہ روس کے دوران صدر ولادی میر پوتین سے کہا ہے کہ وہ شام میں موجود ایرانی ملیشیا کو نکال دیں تو تل ابیب بشار الاسد کے اقتدار کے لیے خطرہ نہیں بنے گا۔

’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کے مطابق اسرائیلی حکومت کے ایک عہدیدار کا کہنا ہے کہ بدھ کو ماسکو میں روسی صدر سے ملاقات کے دوران وزیراعظم نیتن یاھو نے ان پر واضح کیا کہ تل ابیب بشارالاسد کے اقتدار کے لیے خطرہ بننے کا کوئی ارادہ نہیں رکھتا۔ تاہم انہوں نے ماسکو پر شام میں موجود ایرانی فورسز کو نکال باہر کرنے کا مطالبہ دہرایا۔

اسرائیلی حکومت کےعہدیدار نے وزیراعظم نیتن یاھو کا ایک بیان نقل کیا ہے جس میں ان کا کہنا تھا کہ ہم بشارالاسد کے خلاف کوئی مہم جوئی نہیں کریں گے مگر روس کو چایئے کہ وہ شام میں موجود ایرانیوں کو نکال باہر کرے۔

صہیونی حکومت کے عہدیدار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ روس پہلے ہی شام میں اسرائیل اور ایران کو باہمی تصادم سے روکنے کے لیے اقدامات کر رہا ہے۔

اگرچہ روس نے شام کے وادی گولان میں ایرانی فورسز کو دور رکھنے کی کوشش کی ہے۔ ایرانی فورسز شام اور اسرائیل کی سرحد پر 80 کلومیٹر دور ہیں مگر اسرائیل کا اصرار ہے کہ ایران شام کی سرزمین مکمل طور پر خالی کر دے۔

مقبول خبریں اہم خبریں