شامی فوج کا سویداء صوبے پر مکمل کنٹرول

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

شام میں انسانی حقوق کے نگراں گروپ المرصد کے مطابق شامی سرکاری فوج نے داعش تنظیم کے ساتھ شدید لڑائی کے بعد سویداء صوبے کے مشرقی اور شمال مشرقی حصّے پر بھی کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔ اس طرح اب پورا صوبہ شامی فوج کے کنٹرول میں آ گیا ہے۔

شامی سرکاری میڈیا نے بتایا ہے کہ اس لڑائی کے دوران متعدد شدت پسند مارے گئے اور بقیہ فرار ہو گئے۔

سویداء صوبے پر شامی فوج کا کنٹرول تقریبا 10 روز تک جاری رہنے والی گھمسان کی معرکہ آرائی کے بعد سامنے آیا ہے۔ اس دوران شامی فوج نے داعش کے ٹھکانوں پر شدید گولہ باری کا سلسلہ جاری رکھا۔

اس وقت دمشق اور سویداء کے درمیان انتظامی سرحد پر شامی فوج اور اس کی ہمنوا ملیشیاؤں کی داعش تنظیم کے ساتھ لڑائی جاری ہے۔ شامی فوج شدت پسند تنظیم کو سویداء کے دیہی علاقوں میں واپس آنے سے روکنے کی کوشش کر رہی ہے۔

اس سے قبل روس نے علاقے میں سرگرم تحریک "رجال الکرامہ" سے مطالبہ کیا تھا کہ سویداء کے دیہی علاقے کے اطراف پھنسے ہوئے تقریبا 2000 شامی شہریوں کو "اُن کے ابتر انسانی حالات کے پیشِ نظر" درعا صوبے منتقل ہونے کی اجازت دی جائے۔ تاہم مذکورہ تحریک کے سربراہ نے اس تجویز کو سختی سے مسترد کر دیا۔ اُن کا کہنا ہے کہ داعش تنظیم کے ہاتھوں اغوا ہونے والے سویداء صوبے کے باسیوں کا معاملہ اس وقت اولین ترجیح ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں