.

شام : الحسکہ صوبے میں فوجی اڈے سے امریکی فوج کا انخلا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی کے ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ امریکی فوج نے شام کے صوبے الحسکہ کے شہر المالکیہ میں اپے فوجی اڈے کو خالی کر دیا ہے۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے شام میں امریکی فوج کے انخلا کے فیصلے کے بعد یہ امریکی فورسز کا پہلا اڈہ ہے جو خالی کیا جا رہا ہے۔ شام میں 2200 کے قریب امریکی فوجیوں کے تعینات کے بعد اب ایسا نظر آ رہا ہے کہ انخلا کا عمل واقعتا شروع ہو گیا ہے۔

مذکورہ علاقے کے لوگوں نے بتایا کہ 50 کے قریب امریکی فوجی الحسکہ کے شہر المالکیہ میں اپنے ٹھکانے سے کوچ کر کے اپنی بکتر بند گاڑیوں میں عراق کی جانب روانہ ہو گئے۔

ترکی کے ذرائع کا کہنا ہے کہ امریکی فوجی شام میں 18 اڈوں پر پھیلے ہوئے ہیں جب کہ امریکی عہدے داران یہ کہہ چکے ہیں کہ انخلا کا عمل مکمل کرنے میں دو سے تین ماہ کا عرصہ درکار ہو گا۔

امریکی انخلا نے شمالی شام میں کھیلے جانے والے پتوں کو خلط ملط کر دیا ہے جہاں انقرہ، ماسکو اور تہران اپنا کنٹرول قائم کرنے کی دوڑ میں لگے ہوئے ہیں۔ تاہم ایسا لگ رہا ہے کہ کُرد پروٹیکشن یونٹس روس کے ساتھ ایک سمجھوتے کے سب سے زیادہ نزدیک ہیں جس سے ترکی کی مداخلت عفریت تو دُور ہو جائے گا مگر کُردوں کے پاس موجود بھاری امریکی ہتھیار اس سمجھوتے کو متاثر کر سکتا ہے۔

معاہدے کے ابتدائی سمجھوتے کے مطابق کُرد یونٹس ترکی کے ساتھ پوری سرحد پر اپنی تعیناتی کا مطالبہ کر رہے ہیں جب کہ شامی حکومت اس پورے علاقے پر کنٹرول کے واسطے کوشاں ہے جس میں پرکشش تیل کے کنوئیں بھی واقع ہیں۔