.

شام : داعش کے چیک پوائنٹ پر حملے میں امریکا نواز سات جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سخت گیر جنگجو گروپ داعش نے شام کے شمالی شہر منبج میں امریکا کے حمایت یافتہ جنگجوؤں پر حملے کی ذمے داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔اس حملے میں شامی جمہوری فورسز ( ایس ڈی ایف ) کے سات جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔

داعش نے سوشل میڈیا چینلز پر جاری کردہ ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’ خلافت کے فوجیوں نے( سوموار اور منگل کی درمیانی) رات منبج شہر کے مغرب میں ایک چیک پوائنٹ پر حملہ کیا تھا‘‘۔منبج کی انتظامی شہری کونسل کے ترجمان کے ایک بیان کے مطابق مسلح افراد نے چیک پوائنٹ پر تعینات جنگجوؤں پر فائرنگ کی تھی جس سے سات اہلکار مارے گئے ہیں۔

کونسل کے ترجمان شرفا ن درویش نے کہا ہے کہ ’’یہ داعش کے سلیپر سیل کا انتقامی حملہ ہوسکتا ہے ۔داعش کے خلاف فتح پانے کے بعد اب ہم ان خفیہ سیلوں پر توجہ مرکوز کررہے ہیں۔ داعش انھیں فعال کر رہے ہیں اور وہ اب ہم حملے کررہے ہیں لیکن ہم ان کی کارروائیوں کو ناکام بنا دیں گے‘‘۔

برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق نے بھی کہا ہے کہ یہ حملہ داعش ہی کی کارروائی ہوسکتا ہے اور گذشتہ ہفتے الباغوز میں داعش کی شکست کے بعد ان کا اس نوعیت کا یہ پہلا حملہ ہے۔ منبج ماضی میں داعش کا مضبوط گڑھ رہا ہے لیکن ایس ڈی ایف نے انھیں وہاں سےا مریکا کی قیادت میں اتحاد کی مدد سے نکال باہر کیا تھا۔ وہ تب سے اس طرح کے چھاپا مار حملے کررہے ہیں۔ داعش نے قبل ازیں 16 جنوری کو منبج میں ایک تباہ خودکش بم حملہ کیا تھا جس کے نتیجے میں چار امریکی فوجیوں سمیت انیس افراد ہلاک ہوگئے تھے ۔